سورج کے کعبہ شریف کے برابر اوپر آنے پر کیا ہوا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

کل ہفتے کے روز مکہ مکرمہ کے مقامی وقت کے مطابق دن 12 بج کر 18 منٹ پر سورج عین کعبہ شریف کے برابر اوپر آیا۔ عمودی طور پرسورج کے کعبہ شریف کے اوپر آنے کا یہ اس سال کا پہلا واقعہ ہے۔

جدہ میں فلکیاتی سوسائٹی کے سربراہ انجینیر ماجد ابو زاہرہ نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ جب سورج تقریباً 90 ڈگری پر آیا تو اس وقت خانہ کعبہ کے برابر اوپر تھا اور اس وقت کعبہ شریف کا سایہ مکمل طور پر غائب ہوگیا۔ صرف کعبہ شریف ہی نہیں بلکہ مکہ معظمہ میں دیگر عمارتوں اور اجسام کے سائے صفر ہو گئے۔ اس وقت سورج آسمان کے دور دراز علاقوں کی طرف جھک گیا۔

انہوں نے وضاحت کی کہ سورج کے عمودی طور پر آنے کا واقعہ خط استوا اور سرطان مدارکے درمیان کعبہ کےآنے کے نتیجے میں ہوتا ہے۔

آسمان پر سورج کی بہ ظاہر حرکت کے دوران یہ کعبہ کے اوپر سیدھا نظر آتا ہے۔ مئی کے مہینے میں خط استوا سے سورج کے سرطان مدار کی طرف جاتے ہوئے یہ منظر دکھائی دیتا ہے جب کہ جولائی میں خط استوا سے واپسی پر سورج ایک بار پھر کعبہ شریف پر برابر آئے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ 23.5 درجے شمال اور جنوب کے عرض البلد پر واقع تمام علاقے سال میں دو بار اس فلکیاتی مظہر کا مشاہدہ کرتے ہیں، لیکن اس جگہ کے عرض بلد کے لحاظ سے یہ منظر مختلف اوقات میں ظاہر ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سورج کی گردش کے رجحان کو جدید تکنیکوں کی ضرورت کے بغیر جیومیٹری کے کچھ آسان اصولوں کا استعمال کرتے ہوئے زمین کی گردش کا حساب لگانے میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ ایک قدیم طریقہ ہے جو 2000 سال سے زیادہ پرانا ہے۔ اس سے یہ بھی پتا چلتا ہے کہ زمین گول ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں