لبنانی وزیراعظم اورصدرامریکی ایلچی سےاسرائیل سے سمندری تنازع پربات چیت کے لیے متفق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان کے نگران وزیراعظم اور صدر نے اسرائیل کے ساتھ جنوب میں سمندری سرحد کی حدبندی پر مذاکرات جاری رکھنے کے لیےامریکی ایلچی آموس ہوشسٹین کو بیروت مدعو کرنے پراتفاق کیا ہے۔

لبنان نے اتوار کے روز اسرائیل کو متنازع پانیوں میں کسی بھی ’’جارحانہ کارروائی‘‘ کے خلاف خبردار کیا تھا جہاں دونوں ریاستوں کو آف شور توانائی کے وسائل دریافت ہونے کی امید ہے۔گذشتہ روز لندن میں قائم کمپنی اینرجیان کے زیرانتظام ایک جہازاسرائیل کے لیے گیس نکالنے کی غرض سے ساحل سے باہر پہنچا تھا۔

لبنانی صدرمیشیل عون نے ایک بیان میں اسرائیل کو خبردار کیا ہے کہ لندن میں قائم اینرجیان کے زیرانتظام قدرتی گیس کے ذخیرے سے پیداوارشروع کرنے کے لیے جہاز کی آمد کے بعد متنازع علاقے میں کوئی بھی سرگرمی جارحیت اور اشتعال انگیزی کے مترادف ہوگی۔

دوسری جانب اسرائیل کا کہنا ہے کہ زیربحث علاقہ اس کے خصوصی اقتصادی زون کے اندر واقع ہے نہ کہ متنازع پانیوں میں۔

لیکن لبنانی صدارت نے کہا کہ عون نے نگران وزیراعظم نجیب میقاتی سے ’’اسرائیل کے ساتھ متنازع سمندری علاقے میں‘‘ جہاز کے داخلے پر تبادلہ خیال کیا اور آرمی کمانڈ سے کہا کہ وہ انھیں اس معاملے سے متعلق درست اور سرکاری اعداد و شمار فراہم کرے۔

صدرعون نے کہا کہ جنوبی سمندری سرحد کی وضاحت کے لیے مذاکرات جاری ہیں اور’’متنازع علاقے میں کوئی بھی کارروائی یا سرگرمی اشتعال انگیزی اور جارحانہ کارروائی سمجھی جائے گی‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں