"شاہراہ مکہ"پروجیکٹ سےمستفید ہونے والا پہلا بنگالی عازمین حج قافلہ سعودی عرب پہنچ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی طرف سے دُنیا کے مختلف مسلمان ممالک کےعازمین حج کے لیے شروع کردہ’روڈ ٹو مکہ‘ اقدام کے تحت بنگلہ دیش سے پہلا قافلہ گذشتہ روز مملکت میں پہنچا۔

بنگلہ دیش کے عازمین حج پر مشتمل قافلہ کل سوموارکو جدہ کے کنگ عبدالعزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے پر پہنچا۔ جمہوریہ بنگلہ دیش سے تعلق رکھنے والے مسلمانوں کا اس پروجیکٹ کے ذریعے حجاز مقدس کے سفر کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

عازمین حج کا یہ قافلہ ڈھاکا کے حضرت شاہ جلال بین الاقوامی ہوائی اڈے سے روانہ ہوا جب کہ شاہ عبدالعزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے پران کا استقبال ڈائریکٹر جنرل پاسپورٹ سروس اور شاہراہ مکہ اقدام کی نگران کمیٹی کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل سلیمان الیحییٰ، جدہ میں بنگلہ دیش کے قونصل جنرل محمد نجم الحق اور دیگر نے کیا۔

سعودی پریس ایجنسی "ایس پی اے" کے مطابق اس سال 1443ھ کو جمہوریہ بنگلہ دیش میں ’روڈ ٹو مکہ‘ اقدام کا آغاز 1440ھ کے بعد پانچ مسلمان ممالک کے عازمین حج کے لیے کیا گیا ہے۔ اس میں پاکستان کے علاوہ ملائیشیا، انڈونیشیا اور مراکش شامل ہیں۔ یہ اقدام "ضیوف الرحمان" سروس پروگرام کے اقدامات میں سے ایک ہے جو مملکت کے وژن 2030 کے اہداف کا حصہ ہے۔

اس اقدام کا مقصد مہمان ممالک سے آنے والے حجاج کےلیے حج کے موقعے پر براہ راست نئی سہولیات مہیا کرنا ہے۔ اس سروس کا آغاز آن لائن ویزے کی سہولت سے ہوتا ہے۔ اس کے بعد عازم حج کے کوائف کی جان کاری،، صحت کی شرائط پوری ہونے کے بعد مہمان ملک کے ہوائی اڈےسے حجاج کی روانگی سے قبل مملکت میں ان کےقیام اور نقل وحمل کی سہولیات طے کرنا ہے۔ اس طرح ان ممالک سے آنے والے عازمین حج کی سعودی عرب میں مزید جان پڑتال نہیں کی جائے گی بلکہ انہیں براہ راست بسوں میں بٹھا کر مکہ معظمہ یا مدینہ منورہ میں ان کی منزل مقصود تک پہنچایا جائے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ ان کے سامان کو بھی ان کی قیام گاہوں تک پہنچایا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں