امارات: جوہری توانائی کا تیسرا یونٹ کام شروع کرنے کے لیے تیار

کاربن کے بغیر بجلی کی تیاری اور فراہمی روزگار کی طرف اہم خلیجی ریاست کا بڑا قدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برکہ جوہری پلانٹ کے تیسرے ری ایکٹر میں ایندھن بھرنے کا کام جاری ہے۔ ایندھن کا عمل مکمل ہونے کے ساتھ ہی یہ تیسرا یونٹ بھی بجلی پیدا کرنا شروع کر دے گا۔ اس سلسلے میں اس کے لیے لائسنس پچھلے ہفتے حاصل کیا گیا اور لائسنس ملنے کے فوری بعد ایندھن بھرنے کا کام شروع کر دیا گیا ہے۔

دی نیشنل اخبار کے مطابق جوہری ری ایکٹر کے ریگولیٹر کی جانب سے متحدہ عرب امارات کے چار ری ایکٹرز میں سے تین کو لائسنس مل چکا ہے، دو لائسنس شدہ ری ایکٹر پہلے ہی مکمل چالو حالت میں آ چکے ہیں۔ اب تیسرا بھی کام شروع کرنے کو تیار ہے۔ مکمل طور پر اس کے چالو ہونے کی صورت میں زیرو کاربن کے ساتھ 1400 میگاواٹ بجلی نیشنل گرڈ کو فراہم ہو سکے گا۔ اگلے چند ماہ میں یہ مکمل طور پر آپریشنل ہو جائے گا۔

واضح رہے امارات کی نیوکلئیر انرجی کارپوریشن نے اتوار کے روز بتایا ہے کہ اس کے ذیلی ادارے '' نواح'' نے امارات کے مرکزی ادارے فیڈرل اتھارٹی برائے نیوکلئیر ریگولیشن سے لائسنس حاصل کیا یے۔ ''نواح'' ری ایکٹرز کے چلانے اور مرمت وغیرہ کا ذمہ دار ادارہ ہے۔

لائسنس کے اجرا سے پہلے ریگولٹری اتھارٹی نے مختلف پہلووں سے ری ایکٹر کا تفصیلی جائزہ لیا تھا۔ تاکہ کسی بھی قسم کی پیچیدگی یا غلطی کا احتمال نہ رہے۔ یہ سارے جائزے کامیابی سے مکمل ہونے کے بعد لائسنس جاری کر دیا گیا۔

برکہ عرب دنیا کا واحد جوہری توانائی کا پلانٹ ہوگا جو کئی یونٹس پر محیط ہے۔ اس کی وجہ سے روز گار کے اعلی مواقع پیدا ہوئے اور یہ صنعتی شعبے کی ترقی کا اہم سنگ میل ثابت ہو گا۔ ماحولیاتی اعتبار سے مفید اور گیس پر انحصار کم کرنے کا ذریعہ ہوگا۔ نیز اس کے مکمل چالو ہو جانے پر سالانہ بنیادوں پر کاربن کے اخراج کو بائیس اعشاریہ چار ملین ٹن تک روکا جا سکے گا۔

برکہ نیوکلئیر ری ایکٹر مجموعی طور پر چار یونٹس پر مشتمل ہے، دو کام شروع کر چکے ہیں، تیسرا شروع کرنے جا رہا ہے جبکہ چوتھے یونٹ کی تیاری تکمیلی مراحل میں ہے۔ برکہ بنیادی طور پر امارات کو کاربن کے اخراج سے مکمل طور پر بغیر توانائی فراہم کرنے کا اہم ذریعہ ثابت ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں