بیٹی کی گریجوایشن کی تقریب میں معذور باپ کی آمد کا جذباتی منظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو کو شہریوں کی جانب سے غیرمعمولی طور پر سراہا جا رہا ہے۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ تقسم اسناد کی ایک تقریب میں ایک معذور شہری اپنی بیٹی کو میڈیکل کی ڈگری ملنے پرخوشی سے لبریز جذبات میں گلے لگایا۔

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جسمانی طورپر معذور محمد العنزی گریجوایشن کی تقسیم اسناد میں شریک تھے۔ اس دوران ان کی بیٹی ڈاکٹرعبیر کوسند دینے کے لیے اسٹیج پر بلایا گیا تو اس کے والد عنزی جو مشکل سے چل سکتے ہیں کوشش کرکے اسٹیج پرپہنچ گئے اور ہونہار بیٹی کو گلے لگا لیا۔

خیال رہے کہ ڈاکٹرعبیرنے تبوک یونیورسٹی کی فیکلٹی آف میڈیسن اینڈ سرجری سے طب کی ڈگری حاصل کی اور اس نے اپنی جماعت میں پہلی پوزیشن حاصل کرکے یونیورسٹی کی بہترین طالبہ کا اعزاز بھی حاصل۔ کیا ہے۔

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو میں باپ بیٹی دیکھتے جا سکتے ہیں۔ ویڈیو میں باپ کو معذوری کے باوجود فخر سے چلتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

تقریب کے اسپانسر شہزادہ فہد بن سلطان کو گلے لگاتے ہوئے انہوں نے بیٹی کی شاندار کامیابی اور اس کے ساتھ والہانہ محبت پران کی تعریف کی۔ انہوں نے ڈاکٹر عبیر سے کہاکہ وہ تکریم میں اپنے والد کا ماتھا چومیں اور ان کی طرف سے ملنے والی محبت اور تعاون پر ان کا شکریہ ادا کریں۔

اس موقعے پر العنزی نے کہا کہ بیٹی کا ڈاکٹر بننا میرا خواب تھا اور آج میرا یہ خواب پورا ہوگیا۔

انہوں نے بتایا کہ میری بڑی بیٹی نے چھ سال تک اسی یونیورسٹی سے اور اسی کالج میں"میڈیسن اینڈ سرجری" سے امتیاز کے ساتھ گریجویشن کیا لیکن وہ بیماری کے باعث انتقال کرگئیں۔

ویڈیو پر سوشل میڈیا پرباپ بیٹی کے جذبات کے جذبات کوسراہا۔ ایک شہری نے لکھا کہ بیٹی کا اصل سہارا اس کےوالدین ہوتے ہیں جو پیسہ اور اپنی جان ومال سب کچھ بیٹیوں پر قربان کردیتےہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں