اسرائیل کا حزب اللہ پرسرحد کے قریب 15 نئی مانیٹرنگ چوکیاں قائم کرنے کا الزام

حزب اللہ پراپنی سرگرمیوں کوماحولیاتی تنظیم کا رنگ دینے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی چینل 24 نیوز کے مطابق حالیہ ہفتوں میں ایران نواز لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ ملیشیا نے لبنان- اسرائیل سرحد کے ساتھ تقریباً 15 نئی مانیٹرنگ چوکیاں قائم کی ہیں۔ یہ مراکز جو حزب اللہ کے کارکنان چلاتے ہیں، ایک واچ ٹاور اور ملحقہ رہائشی سہولیات پر مشتمل ہے۔

اسرائیلی ٹی وی چینل نے فوج کے حوالے سے کہا ہے کہ حزب اللہ اپنی سرگرمیوں کو چھپانے کی کوشش کر رہی ہے، اور انہیں ایک 'ماحولیاتی' تنظیم کی سرگرمیوں کے طور پر بیان کرتی ہے۔ چینل نے اسرائیلی فوجی جنرل اوشالوم دادون کا کہنا ہے کہ ہمارے لیے بالکل واضح ہے کہ ان سائٹس کو چلانے والے کون لوگ ہیں۔

اسرائیل بارہا ایرانی اتحادی حزب اللہ ملیشیا پر ماحولیاتی تنظیم گرین ودآؤٹ بارڈرز کی آڑ میں اپنی سرحدوں پر آبزرویشن پوائنٹس بنانے کا الزام لگاتا رہا ہے۔

اکتوبر 2018 میں اسرائیلی فوج نے سرحد کے قریب حزب اللہ کی ایک سائٹ کی نشاندہی کی جس میں اسی تنظیم کے دفترکے ایک ماحولیاتی تنظیم کے دفتر کے طور پر دکھایا گیا تھا جبکہ 2017 میں، ایسی پانچ جگہوں کا انکشاف ہوا تھا جو حزب اللہ کی انٹیلی جنس اور جاسوسی کی کوششوں کے لیے استعمال کی گئی تھیں۔

فوج کے مطابق لبنانی شہری تنظیم حزب اللہ کو جزوی طور پر مالی امداد فراہم کی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں