زلزلہ متاثرین کے لیے ساڑھے چوبیس ٹن کا امدادی سامان دبئی سے کابل پہنچ گیا

شیخ محمد بن راشد المکتوم کی ہدایات پر کارگو جہازوں کے ذریعے امدادی کارروائیں تیز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شیخ محمد بن راشد المکتوم نے افغانستان میں حالیہ تباہ کن زلزلے سے متاثرہ افراد کے لیے انسانی بنیادوں پر ہنگامی کارگو جہازوں کے ذریعے امدادی سامان کابل بھجوایا گیا ہے۔ تاکہ زلزلہ سے متاثرہ ہزاروں افراد کی انسانی بنیادوں پر مدد کی جا سکے۔

ایک ہفتہ پہلے بدھ کے روز افغانستان کے صوبہ پکتیکا میں خوفناک زلزلے کے باعث ایک ہزار سے زائد شہری جاں بحق اور سینکڑوں مکانات کی تباہی سے ہزاروں لوگ بے گھر ہو گئے تھے۔ زلزلے میں زخمی ہونے والے افراد کی تعداد بھی ہزاروں میں ہے۔ اس زلزلے کی شدت پانچ اعشاریہ نو بتائی گئی تھی اور حالیہ دو عشروں کے دوران آنے والے زلزلوں میں سے یہ شدید ترین زلزلہ تھا۔

منگل کے روز زلزلہ متاثرہ افغان شہریوں کے لیے دبئی سے کابل ساڑھے چوبیس میٹرک ٹن امدادی سامان بھجوایا گیا ہے۔ دبئی میں عالمی ادارہ صحت کے گوداموں سے ہنگامی بنیادوں پر افغانستان روانہ کیے جانے والے اس امدادی سامان میں ادویات ، طبی آلات ، ہیضے کی وبا سے بچاو کے طبی لوازمات شامل ہیں۔ کیونکہ خطرہ ہے کہ متاثرہ علاقے میں ہیضے کی وبا پھیلنے کا خطرہ ہو سکتا ہے۔

آئی ایچ سی کی چیف ایگزیکٹو آفیسر گوسیپ صبا نے اس بارے میں بتایا ہے کہ یہ ایک انتہائی تباہ کن زلزلہ تھا ۔ جس کی وجہ سے افغانستان میں انسانی مشکلات میں مزید اضافہ ہو گیا ہے ۔ آئی ایچ سی نے دبئی کے شیخ محمد بن راشد الکتوم ہدایات پر امدادی سرگرمیاں تیز کر دی ہیں ۔ تاکہ تباہی سے دوچار لوگوں کو عالمی برادری کی جانب سے فوری اور ضروری امداد پہنچ سکے۔''

انہوں نے مزید بتایا کہ ایسی بہت سی تنظیمیں جن کی ہم یہاں میزبانی کرتے ہیں 24 گھنٹے کام کر رہی ہیں۔ تاکہ اپنے وسائل افغانستان کے زلزلہ متاثرین کے لیے بھجوا سکیں۔ ہم ان سب کے ساتھ یہاں موجود گوداموں سے سامان افغنانستان تک منتقل کرنے کے لیے مسلسل رابطہ کاری اور مدد میں مصروف ہیں ۔ ''

صبا نے کہا '' یہ وقت بہت اہم ہے۔ دبئی اور امارات کی قیادت زلزلہ سے متاثر افراد کی زندگیاں بچانے کے لیے سرعت رفتار ''ریسپانس'' چاہتی ہے۔'' اس کے لیے ہر ممکن اقدامات جاری ہیں۔

صحت کے عالمی ادارے ڈبلیو ایچ او کے افغانستان میں نمائندہ ڈاکٹر دیپنگ لاو نے اس موقع پر کہا ہے '' ٹراما اور ایمرجنسی سے نمٹنے کے لیے دبئی سے ''میڈیکل کٹس'' پہنچ رہی ہیں۔ دبئی کا اس سلسلے میں کردار بڑا اہم ہے۔ ان امداد اشیا سے کم از کم تین لاکھ چالیس ہزار افراد کی مدد کی جاسکے گی۔ ''

واضح رہے گذشتہ ہفتے متحدہ عرب امارات نے تیس ٹن کا امدادی سامان بھجوایا تھا، جس میں خوراک سے متعلق اشیا کے علاوہ ادویات بھی شامل تھیں جو امارات کے سربراہ شیخ محمد بن زید النہیان کی ہدایات پر بھجوائی گئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں