.

سعودی عرب: قدرتی ذخائر اور پارکوں میں 1260 جنگلی جاندار چھوڑ دیے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پچھلے سیزن میں نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈویلپمنٹ نےمعدومیت کے خطرے سے دوچار 1260 جانداروں کو نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت مملکت کے تمام خطوں قائم محفوظ مقامات میں چھوڑ دیے ہیں۔

ریلیز کے پروگراموں میں 665 ریم ہرن، 77 اِدمی ہرن، 134 پہاڑی آئی بیکس، 228 عربین اوریکس، 100 ہوبارا بسٹرڈز، بلیوں اور بھورے عقابوں کی ایک بڑی تعداد بھی شامل ہے۔

نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈویلپمنٹ نے واضح کیا کہ مقامی خطرے سے دوچارجانداروں دوبارہ آبادکاری ہمارے قدرتی ماحول میں حیاتیاتی تنوع کو بحال کرنے میں مدد دے گی ایک پرکشش مثبت ماحول کی تعمیر اور معیار زندگی کو بہتر بنانے کے لیے مملکت کے وژن 2030 کے اہداف کو حاصل کرنے میں معاون ثابت ہوگی۔

مرکز نے مزید کہا کہ سعودی عرب وائلڈ لائف عالمی مراکز میں سب سے آگے خصوصی مراکز کا مالک ہے جو خطرے سے دوچار انواع کی افزائش نسل اور سخت ترین بین الاقوامی معیارات کے مطابق ان کے قدرتی ماحول میں دوبارہ آباد کرنے میں سب سے آگے ہیں۔

انہوں نے وضاحت کی کہ افزائش نسل اور آبادکاری کے پروگراموں میں نیشنل سینٹر فار دی ڈویلپمنٹ آف وائلڈ لائف کی کامیابیاں ایک طویل، دانستہ اور سائنسی بنیادوں پر کیے گئے کام کا نتیجہ ہیں جس میں ان جانداروں کوپروگرام میں شامل کیا گیا جو جنگل میں ناپید ہو چکے ہیں یا معدومیت کا سامنا کر رہے ہیں۔ مملکت کے ماحول میں حیاتیاتی تنوع کو فروغ دینے اور ماحولیاتی توازن کو بڑھانے کے لیے ان کا کردار سب سے اہم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں