جازان میں تیراکی کرنے والے دو نوجوان دلدل میں ڈوب کرہلاک، لاشیں نکال لی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے شہری دفاع کے غوطہ خوروں نے 18 اور 25 سال کی عمر کے دو یمنی باشندوں کی لاشیں موسلا دھار بارشوں کی وجہ سے پانی کے دلدل سے نکال لیں۔ یہ دونوں نوجوان سعودی عرب کے علاقے جازان میں ایک تالاب میں نہانے گئے جہاں وہ دلدل میں اتر گئے۔

تفصیلات کے مطابق ڈوبنے والے دونوں افراد کے رشتہ دار نے بتایا کہ ان میں سے ایک تیراکی کی غرض سے دلدل میں داخل ہوا لیکن وہ باہر نہ نکل سکا تو دوسرے نے اسے بچانے کی کوشش کی لیکن وہ ایک ساتھ ڈوب گئے۔

سول ڈیفنس کی ٹیموں نے مرنے کے بعد ان کی لاشیں نکال لیں۔

قابل ذکر ہے کہ اس خطے میں طوفانی بارشوں کا سلسلہ جاری ہے جس کی وجہ سے اس وقت گورنری اور پہاڑی بلندیوں میں بارش ہو رہی ہے۔

اس کے نتیجے میں مجاز حکام بارش کی اس صورتحال کے خطرات اور طوفانوں کو عبور کرنے کے اثرات سے لوگوں کو خبردار کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں۔

جازان کا علاقہ برسات کے موسم میں سالانہ بارشوں کی وجہ مشہور ہے۔ یہاں اکثر ہلکی، درمیانے اور شدید درجے کی بارشیں ہوتی ہیں۔

موسمیات کے قومی مرکز نے توقع ظاہر کی ہے کہ جازان کے علاقے میں درمیانے درجے یا شدید نوعیت کی مزید بارشیں ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں