سعودی عرب میں مقامی سیاحت میں تیس فیصد اضافہ

ایک سال میں ایک کروڑ سیاحوں نے ثقافتی مراکز کے وزٹ کیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں مقامی سیاحت فروغ پذیر ہے۔ 2021 میں ایک کروڑ سیاحوں نے سعودی ثقافتی مراکز کی سیر کی ہے۔ یہ پچھلے سال کے مقابلے میں 30 فیصد اضافہ ہے۔ اس اضافے کا ایک سبب کورونا پابندیوں کا خاتمہ بھی ہے۔

وزارت ثقافت نے اس حوالے سے اپنی رپورٹ 2021 میں بتایا ہے کہ ثقافتی حوالے سے لیے گئے حالیہ 'انیشی ٹیوز' کی وجہ سے سیاحت، تھیٹر ، سینما ، فنی نمائشوں اور عجائب گھروں کی سرگرمیوں میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

2019 میں جب سے سعودی عرب نے قومی ثقافتی پالیسی کے تحت اہم اقدامات کرنا شروع کیے ہیں، سیاحتی رجحانات میں بھی بہتری آئی ہے۔ اسی قومی پالیسی کے تحت مختلف گرانٹس اور فنڈز کا اجرا بھی کیا جاتا رہا ہے۔ جس کے نتیجے میں علمی و ادبی ، فنی وثقافتی تعلیمی و کاروباری سرگرمیوں میں بہتری آئی ہے اور مقامی سیاحت کو بھی فروغ ملا ہے۔ سیاح ملک کے فطری حسن اور خوبصورت مناظر فطرت کی طرف مائل ہو رہے ہیں۔

سیاحوں کے لیے قدرتی مناظر کے حوالے سے جیزان ، عاسیر کے علاوہ مکہ ومدینہ سمیت تبوک ایسے شہر بھی سیاحوں کے لیے غیر معمولی دلچسپی کے حامل ہیں۔ سعودی عرب کے ان شہروں میں موجود 'مونو منٹس' اور مناظر سیاحوں کے دلوں کو خوب لبھاتے ہیں۔

سعودی وزیر سیاحت شہزادہ بدر بن عبداللہ نے اس سلسلے میں جاری کردہ اپنے بیان میں کہا 'مملکت سعودیہ غیر معمولی اور بے نظیر قسم کے اقدامات کر رہی ہے جن سے ثقافتی شعبے میں ترقی و فروغ ہوگا۔ ' ہم نے ایک ماحول بنا دیا ہے۔ جس کے نتیجے میں تخلیق کارپنپتے ہیں ، لوگوں کو اپنی تاریخ پر فخر ہوتا ہے اور اپنے مستقبل کے حوالے سے پر امیدی کی طرف آتے ہیں۔

وزارت سیاحت نے اس کو بھی نمایاں کیا ہے کہ سعودی عرب نے دوسرے عرب ممالک کے مقابلے میں عجائب گھر بنانے کا بھی وعدہ کیا ہے۔ جبکہ یہ تعداد برطانیہ اور جاپان کے مقابلے میں اب بھی بہت کم ہے۔ اسی طرح مصر میں بھی بہت ساری نادر جگہیں ہیں۔ ان تمام ممالک میں سالانہ بنیادوں پر لاکھوں لوگ وزٹ کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں