ترکیہ میں سفیرعن قریب ذمہ داریاں سنبھالے گا، حماس بڑی رکاوٹ ہے: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ترکیہ میں اسرائیلی سفارت خانے کی ناظم الامور نے جمعہ کو کہا ہے کہ انہیں توقع ہے کہ استنبول میں حماس کے دفتر کو بند کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ انقرہ میں سفیر کی دوبارہ تقرری کا عمل ہفتوں کے اندر اندر ہو سکتا ہے۔

صحافیوں کے ساتھ ایک ملاقات میں انقرہ میں اعلیٰ اسرائیلی سفارت کار، ایرٹ لیلیان نے کہا کہ سفیر کی دوبارہ تقرری وقت کا معاملہ ہے، ثبوت یا تردید کا سوال نہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل کی طرف سے تاخیر کے امکان کی واحد وجہ اسرائیل میں انتخابات ہیں، لیکن مجھے امید ہے کہ یہ اقدام مناسب وقت پر کیا جائے گا اور یہ عمل چند ہفتوں میں مکمل ہو جائے گا۔"

اس ماہ کے شروع میں ترکیہ اور اسرائیل نے سفارتی تعلقات مکمل طور پر بحال کرنے اور طویل سفارتی ڈیڈ لاک ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔

دونوں ممالک نے سنہ 2018 میں یروشلم میں امریکی سفارتخانہ کھولنے کے خلاف احتجاج اور غزہ کی سرحد پر احتجاج کے دوران اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں 60 فلسطینیوں کی ہلاکت کے بعد ترکیہ نے اسرائیل سے سفارتی روابط محدود کر دیے تھے۔

لیکن انہوں نے طویل عرصے سے کشیدہ تعلقات کو ٹھیک کرنے کے لیے کام کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں