’کلاسیکل گاڑیوں کے شوق نے ان کی باریکیوں سے بھی آشنا کردیا‘

سعودی عرب میں کلاسیکل گاڑیوں کا شوق رکھنے والے خالد بن زوید سے ملیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے خالد بن زوید کلاسیکل کاروں کے جنون کی حد تک شوقین ہیں۔ اسی شوق کی وجہ سے وہ اس نوعیت کی گاڑیوں کی فواید و نقصانات سے بھی بہ خوبی آگاہ ہیں۔ وہ اس نوعیت کی کاروں کے ماہر ہیں اور ان کی باریکیوں سے بھی اچھی طرح واقف ہیں۔

ایسے لگتا ہے کہ خالد بن زوید کا کلاسیکل گاڑیوں کے ساتھ روحانی تعلق ہے۔ سوشل میڈیا پر اپنے فالورزکو ان گاڑیوں کی خصوصیات اور فواید کی وضاحت کرنے کے لیے ایک کلاسک کار کے پاس کھڑے ہو کر انہوں نے تفصیلی بریفنگ دی۔ وہ اس طرح کی کئی ویڈیوز انٹرنیٹ پر نشر کرچکے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ایئر کنڈیشنر کی بو اور سجاوٹ کا انداز بتاتا ہے کہ زوید کو کلاسیکل گاڑیوں سے کتنی محبت ہے۔ سوشل میڈیا پر زوید کو بھرپور داد تحسین بھی ملی ہے۔

بن زوید انٹرنیٹ پر ویڈیوز پوسٹ کرتے ہیں۔ ایک ویڈیو میں وہ گاڑی کا جائزہ لیتا ہے اور اس کی صلاحیتوں کا تجزیہ کرتا ہے۔ خالد بن زوید کی یہ خصوصیت ہے کہ وہ اپنے منفرد انداز اور وضاحت سے پہچانے جاتے ہیں۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے ساتھ بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان کا انداز اصلاحی ہے۔ وہ اس کی صلاحیتوں کا جائزہ لیتے ہیں۔ ایک تھیٹر اداکار اور اظہار اور بیان کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ وہ پرانی یادوں کو جنم دینا چاہتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ان کے والد کی امریکی گاڑیوں کے حصول کا ان پر بہت اثر ہوا جب وہ جوان تھے۔ وہ ان پرانی کشتیوں سے چمٹے ہوئے تھے اور یہ بات ان کے ذہن میں مضبوطی سے قائم تھی۔

سعودی نوجوان گاڑی کی باریکیوں کے بارے میں بات کرتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ اسے سماجی رابطوں کی سائٹس پر وسیع ردعمل ملا۔ اس کا کہنا ہے کہ "ایگزاسٹ کی آوازیں، گاڑی کی اندرونی بو اور آرائشی پرزے بہت سے لوگوں کے لیے کہانیوں اور یادوں کا ذریعہ ہوتے ہیں۔

اسے کئی پرانی گاڑیاں پسند ہیں، جو اس کے دل کے سب سے قریب "سوپربان" ہے اور وہ اسے 1980 میں پروڈکشن کے ساتھ بھی رکھتا ہے۔ اس کے پاس تین دیگر کاروں کے ساتھ ایک امپالا، ماڈل 1968، اور دوسرا ماڈل 1982 کی کار بھی ہے۔

اس کے گھر کی مجلس میں کار کی کلاسک ڈیکوریشن ہوتی ہے۔ یہ ان کا پہلا مشغلہ ہے اور اس میں ان کا زیادہ وقت لگتا ہے۔ اس لیے وہ قدیم چیزوں اور لیمپ شیڈز کے بجائے ماڈلز اور آرائشی ٹکڑوں کے عادی ہو گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں