ایران کا اسرائیل کے لیے کام کرنے والے جاسوسی نیٹ ورک کی گرفتاری کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ہفتے کے روز شمالی ایران کے صوبہ مازندران کے جنرل انٹیلی جنس ڈیپارٹمنٹ نے "بہائی" تنظیم کے 12 ارکان کی گرفتاری کا اعلان کیا ہے جن پر اسرائیل کے لیے جاسوسی کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

اسرائیل میں تربیت یافتہ

ایرانی "العالم" ٹی وی چینل نے محکمہ انٹیلی جنس کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس تنظیم کے دو رہ نماؤں کو اسرائیل میں "بیٹوین جسٹس آرگنائزیشن" میں تربیت دی گئی تھی۔

ایک ماہ قبل ایرانی میڈیا نے پانچ افراد پر مشتمل ایک اسرائیلی جاسوسی نیٹ ورک کی گرفتاری کی اطلاع دی تھی۔

نیم سرکاری ایرانی لیبر نیوز ایجنسی نے کہا ہے کہ پانچ مشتبہ افراد اس سیل کے سربراہ اور اس کے چار معاونین ہیں، سبھی اسرائیل کے لیے کام کرتے ہیں اور موساد کے سربراہ سے رابطے میں ہیں۔

رپورٹ میں مشتبہ افراد کی قومیتیں ظاہر نہیں کی گئیں اور نہ ہی مبینہ سازشوں کے اہداف کی وضاحت کی گئی۔ یہ واضح نہیں ہے کہ اس گروہ کو کب گرفتار کیا گیا تھا۔

قابل ذکر ہے کہ ایران وقتاً فوقتاً ایسے لوگوں کو حراست میں لینے کا اعلان کرتا رہتا ہے جن پر امریکا اور اسرائیل سمیت بیرونی ممالک کے لیے جاسوسی کرنے کے الزامات عاید کیے جاتے رہے ہیں مگر تہران ان الزامات کے لیے ثبوت پیش نہیں کرسکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں