سعودی عرب: غیر قانونی اسقاط حمل کرانے پر غیر ملکی ڈاکٹر اور نرس گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزارت صحت کے اہلکاروں نے ریاض میں غیر قانونی طور پر اسقاط حمل میں ملوث خاتون ڈاکٹر اور نرس کو حراست میں لے لیا۔ اسقاط حمل نجی میڈیکل کمپلیکس کے ایک کلینک میں کرایا گیا تھا۔

وزارت صحت کو اطلاع موصول ہوئی تھی کہ ایک نجی میڈیکل کمپلیکس میں غیر قانونی طور پر اسقاط حمل ان حالات میں کیا گیا ہے کہ وہاں پر طبی کم سے کم ضروری سہولیات بھی پوری نہیں کی گئیں۔ اس طرح مملکت کے نام کی مخالفت کرتے ہوئے مرض کی صحت اور سلامتی کو خطرے میں ڈال دیا گیا۔

ریاض کے محکمہ صحت کی تعمیلی ٹیموں نے سکیورٹی فورسز کے تعاون سے شعبہ ہائے صحت کیلئے لازمی قرار دی گئی شق اٹھائیس کی خلاف ورزی پر ملوث ڈاکٹر اور اس کی معاون کو گرفتار کرلیا۔ اس شق کی خلاف ورزی کرنے والوں کو چھ ماہ تک قید اور سو ہزار درہم تک جرمانہ کیا جا سکتا ہے۔

عمل درآمدی کمیٹیوں نے میڈیکل کمپلیکس کو پرائیویٹ ہیلتھ انسٹی ٹیوشنز کی جانب سے خلاف ورزی کا جائزہ لینے والی کمیٹی کے سپرد کر دیا اور زائد المیعاد طبی مواد اور اسقاط حمل میں استعمال ہونے والے طبی سامان کو قبضہ میں لے لیا۔

وزارت صحت نے کہا مریضوں کے حفاظتی معیارات اور شعبہ صحت کیلئے ضروری قرار دئیے گئے اقدامات کی مانیٹرنگ جاری رہے گی۔ صحت کے مطلوبہ معیارات پر پورا نہ اترنے والے اداروں کیخلاف سخت کارروائیاں جاری رکھی جائیں گی۔

وزارت نے واضح کیا کہ صحت کے معیارات کی مخالفت کرنے والوں کی شکایات ہیلپ لائن 937 پر کی جا سکتی ہیں۔ آگاہ کرنے والی کی شناخت کو ظاہر نہ کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں