جعلی سائٹس سے نمٹںے والے سعودی عرب کے بڑے شہر کون سے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک نئے ڈیجیٹل سماجی تجربے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جدہ میں سامعین ٹیسٹ سائٹس کے ساتھ سب سے زیادہ انٹرایکٹو ہیں جن میں پرکشش پیشکشیں اور پیغامات شامل ہیں جس میں شرکاء کو سروس کے لیے درخواست دینے اور اسے حاصل کرنے کے لیے اپنی ذاتی معلومات کا اشتراک کرنے کی تاکید کی گئی ہے۔جدہ میں یہ شرح 44.2 فیصد ہے۔ اس کے بعد ریاض میں 36 فی صد، دمام9.2 فی صد جب کہ مدینہ اور مکہ کے شہر فہرست میں آخری درجے پر ہیں۔

29 جون سے 16 جولائی 2022 کے دوران ہونے والےتجربے ،جانچ اور ان کے طرز عمل کا مطالعہ کرنے کے لیے قومی انسداد فراڈ مہم کےطور پر کیے گئے تجربے کے نتائج میں یہ دیکھا گیا کہ شہری اپنی ذاتی معلومات اور ڈیٹا کیسے محفوظ رکھ سکتے ہیں۔ اس کام کے لیےانعامی پیشکشیں، مقابلے سامعین کے باہمی تعامل کے سب سے زیادہ فیصد میں سرفہرست ہیں جن کی تعداد 71 ہزار سے زیادہ ہے۔

سعودی بینکوں کی بینکنگ میڈیا اور آگاہی کمیٹی اور سعودی فیڈریشن فار سائبر سکیورٹی، پروگرامنگ اور ڈرونز نے تجربے کے ذریعے 6 سائٹس کو ڈیزائن اور تخلیق کرنے کے لیے کام کیا، جس میں مختلف عمر کے گروپوں اور سماجی مفادات کو ہدف بنایا گیا۔ اس میں وہ اشتہارات کے جواب میں عوام کے رویے کی پیمائش کرتے ہیں اور پرکشش پیشکشیں اس انداز میں پیش کی جاتی ہیں جس میں حصہ لینے والے کی رازداری کو مدنظر رکھا جاتا ہے، کیونکہ کوئی بھی معلومات محفوظ نہیں ہوتی۔ اس لیے ڈیٹا شیئرنگ مکمل کرنے کے اقدامات شروع کرنے سے پہلے ڈیٹا کو محفوظ کرنے کی ضرورت کے بارے میں ایک انتباہی پیغام دکھایا جاتا ہے۔ .

ان ٹیسٹ سائٹوں کے خیال اور پیغام میں پرکشش پیشکشیں پیش کرنا شامل تھا جو یونیورسٹیوں میں سرمایہ کاری اور تعلیم میں دلچسپی رکھنے والوں کو ہدف بناتے ہیں، جو لوگ مقابلوں، انعامات، سفر اور سیاحت کے لیے سائٹس اور پروگراموں میں دلچسپی رکھتے ہیں اس کا مقصد ایک طبقہ کے رویے کا مطالعہ کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں