راس الخیمہ گلوبل نیٹ ورک لرننگ سٹیز کا رکن بن گیا

تعلیمی، معاشی اور ثقافتی شعبوں میں دیگر ملکوں کے ساتھ تجربات شئیر کریں گے: ڈاکٹر عبداللطیف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ کے اعلان کے مطابق راس الخیمہ کو اقوم متحدہ کے تعلیمی، سائنسی ثقافتی ادارے ’’یونیسکو‘‘ کے تحت گلوبل نیٹ ورک آف لرننگ سٹیز پروگرام میں شامل کر لیا گیا ہے۔ اس پروگرام کا مقصد پائیدار اہداف کے حصول کے لیے تعلیمی فروغ اور شہریوں میں سکھنے کے عمل کو عمر بھر جاری رکھنا ہے۔

اس موقع پر جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے جی این ایل سی کی ممبر شپ راس الخیمہ کی تعلیم کے لیے وابستگی، امارات میں تعلیمی مقاصد کے لیے جدید ٹکنالوجی کے استعمال کے پیش نظر اسے یہ ممبر شپ دی گئی ہے تاکہ کمیونٹیز کو مضبوط و با اختیاربنایا جا سکے اور معیار تعلیم کو بہتر سے بہترین کیا جا سکے۔

جی این ایل سی کا فورم آئیڈیا کی شئیرنگ اور مسائل کے حل کے لیے سیکھنے کے عمل کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ واضح رہے راس الخیمہ کی امارات میں حیثٰت اس حوالے غیر معمولی ہے کہ یہ ایشیا، افریقہ اور یورپ کے سنگم پر واقع ہے۔ اس لیے اس کی اہمیت میں ہر آنے والا دن اضافہ کر رہا ہے۔

سیکرٹری جنرل آف راس الخیمہ ایگزیکٹو کونسل ڈاکٹر عبداللطیف خلیفہ نے کہا 'راس الخیمہ کا جی این ایل سی جوائن کرنا امارات کے لیے ایک امتیازی کامیابی ہے ۔ یہ اس امر کا اظہار ہے کہ ہم اپنی تعلیم کے شعبے کے لیے متحرک ہیں۔ یہ تعلیم معاشرے کے ہر طبقے اور شعبے کے لیے اہم سمجھتے ہیں۔‘

ڈاکٹر عبداللطیف نے مزید کہا 'یہ اماراتی قیادت کی دانمشندانہ اپروچ کا بھی مظہر ہے کہ وہ ملک کو عالمی سطح کی مسابقتی ترجیحات کے ساتھ آگے بڑھانے کی خواہاں ہے۔ جی این ایل سی کی ممبر لینے کے بعد راس الخیمہ کو تعلیمی و ثقافتی حوالے سے اپنے تجربات دوسروں کے ساتھ شئیر کر سکے گا، سماجی ترقی کے علاوہ سوسائٹی کے معاشی فیبرک کے بارے میں شئیرنگ کر سکیں گے۔ '

انہوں نے یہ بھی کہا ا'س ممبر شپ کی بدولت دنیا کے دوسرے ملکوں کے تجربات سے راس الخیمہ کے لوگ بھی سیکھ سکیں گے۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں