سعودی عرب میں دفاعی صنعتوں کی لوکلائزیشن کے بارے میں کیا پیش رفت ہو رہی ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

العربیہ چینل پرنشرہونے والے پروگرام’عسکریتاریا‘ کے ایک تازہ ایپی سوڈ میں مملکت میں دفاعی صنعتوں کی ترقی اور ان کی لوکلائیزیشن پر تفصیل سے روشنی ڈالی گئی۔

پروگرام میں ایندھن بھرنے والے طیاروں کے لیے ایک نئے اسرائیلی معاہدے کی خبروں، ایران کی باوار 373 دفاعی نظام کے حتمی ٹیسٹ کرنے کی تیاری اور پولینڈ کی 96 AH-64E اپاچی ہیلی کاپٹر خریدنے کی کوششوں پر بھی بات کی گئی۔

اس پروگرام میں بریکنگ ڈیفنس میگزین کے چیف ایڈیٹر ایرون میٹا کو بہ مہمان مدعو کیا گیا۔ انہوں نےجنوب مشرقی ایشیا میں ہتھیاروں کی دوڑ اور اس دوڑ میں تائیوان کو مسلح کرنے کے لیے حالیہ امریکی معاہدے کے اثرات پر روشنی ڈالی۔

پروگرام کے دوسرے حصے میں ریاض میں فوجی صنعتوں کے لیے شیلڈنگ کمپنی کا دورہ کرکے سعودی عرب میں دفاعی صنعتوں کو مقامی بنانے کے عمل پر بھی نظر ڈالی گئی۔ جہاں پروگرام پیش کرنے والے انجنییر حبیب الخالدی سے کارخانے کے اندر تیار ہونے والی فوجی گاڑی کے مراحل کے بارے میں بات کی۔ شیلڈنگ کمپنی کے سی ای او ایوب صبری نے کمپنی کے مستقبل کے منصوبوں اور کردار کے بارے میں بات کی جو کہ سعودی عرب میں دفاعی صنعتوں کو مملکت کے وژن 2030 کے مطابق مقامی بنانے کے منصوبوں کو نافذ کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں