اماراتی وزیرخارجہ شیخ عبداللہ کی اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینز سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے وزیرخارجہ شیخ عبداللہ بن زاید آل نہیان نے اسرائیل کے دورے کے موقع پر وزیر دفاع بینی گینز سے ملاقات کی ہے۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق اس ملاقات میں دونوں ممالک کے متعدد اعلیٰ سطح کے سفارت کاربھی موجود تھے۔

انھوں نے یواے ای اور اسرائیل کے درمیان دوطرفہ تعلقات بڑھانے اور مشرق اوسط میں استحکام کو فروغ دینے میں معاہدہ ابراہیم کے کردار پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

شیخ عبداللہ نے فلسطینی علاقوں میں استحکام اور سلامتی کے حصول کے لیے صدرمحمودعباس کے زیرقیادت فلسطینی اتھارٹی کی حمایت کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ خطے کے لوگ ترقی اور خوش حالی سے بھرپورمستقبل کے منتظر ہیں۔

بینی گینزنے تمام محاذوں پر دونوں ممالک کے درمیان تعاون کے ذرائع کو مستحکم کرنے میں متحدہ عرب امارات کے وزیرخارجہ کے دورے کو اہم قراردیا اور کہا کہ دونوں ممالک گذشتہ دوسال کے دوران میں شراکت داری اور تعاون کا ایک منفرد ماڈل کامیابی کے ساتھ وضع کیا گیا ہے۔

ملاقات میں متحدہ عرب امارات کے وزیرمملکت احمد بن علی محمد السیغ، معاون وزیرخارجہ برائے ثقافتی ، عوامی سفارت کاری اوربین الاقوامی تعاون عمر غوباش اور اسرائیل میں متحدہ عرب امارات کے سفیر محمد محمود الخوجہ بھی موجود تھے۔

وام نے جمعہ کو خبر دی تھی کہ اسرائیل کے دورے کے موقع پروزیر خارجہ نے اسرائیلی سیاست دانوں سے بھی ملاقات کی تھی۔ان میں سابق وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کے علاوہ اسرائیل کے وزیر خزانہ ایویگڈور لیبرمین اور وزیرداخلہ ایلات شیکڈ بھی شامل تھے۔

شیخ عبداللہ نے یہ دورہ امریکا کی ثالثی میں معاہدہ ابراہیم کے دوسال مکمل ہونے پر کیا ہے۔دونوں ممالک اس معاہدے کا جشن منا رہے ہیں۔اس کے تحت 2020 میں اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان دو طرفہ سفارتی تعلقات استوار ہوئے تھے اور یہ مشرقِ اوسط کی سیاست میں ایک اہم موڑ ثابت ہوا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں