اسرائیلی وزیراعظم لاپیڈ نے فلسطینیوں کے ساتھ تنازع کے دوریاستی حل کی حمایت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل کے وزیراعظم یائرلاپیڈ نے فلسطینیوں کے ساتھ اسرائیل کے دہائیوں سے جاری تنازع کے دو ریاستی حل پرزوردیا ہےاور اس بات کا اعادہ کیا ہے کہ ’’اسرائیل ایران کو جوہری بم بنانے سے روکنے کے لیے جو کچھ بھی ہوسکتا ہے، کرے گا‘‘۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس میں جمعرات کو ان کی یہ تقریر امریکی صدر جو بائیڈن کے اگست میں اسرائیل کے دورے کے موقع پرطویل عرصے سے غیرفعال دو ریاستی حل کی حمایت کی بازگشت ہے۔

انھوں نے کہا کہ فلسطینیوں کے ساتھ دو ریاستوں پر مبنی معاہدہ اسرائیل کی سلامتی،اس کی معیشت اور ہمارے بچّوں کے مستقبل کے لیے ایک درست چیز ہے۔یائرلاپیڈ نے مزید کہا کہ کوئی بھی معاہدہ ایک پُرامن فلسطینی ریاست سے مشروط ہوگاجس سے اسرائیل کو کوئی خطرہ نہیں ہوگا۔

واضح رہے کہ اسرائیلی رہنما ماضی میں اقوام متحدہ کے اسٹیج پر اس مسئلے کا ذکر کرنے سے گریز کرتے رہے ہیں اورگذشتہ کئی سال کے بعد کسی اسرائیلی وزیراعظم نے پہلی مرتبہ مشرقِ اوسط کے دیرینہ تنازع کے دوریاستی حل کی بات کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں