ڈائیلائسزکرانے والی عمر رسیدہ خاتون کا بسترعلالت سے سعودی عرب کے قومی دن کا جشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے 92 ویں قومی دن کے موقعے پرمملکت کے بچوں، جوانوں، بوڑھوں اور مردو زن ہرایک نے بھرپور حصہ لیا اور وطن عزیز سے اپنی محبت اور ایفائے عہد کا اظہار کیا۔

معاصر عزیز’سبق‘ اخبار کی ویب سائٹ پر شائع ایک خبرمیں قومی دن کے موقعے پربستر علالت سےقومی دن منانے کا احوال بیان کیا ہے۔

بہت سے لوگوں نے ڈائیلاسز کے کمرے کے اندر سفید بستر پر اس کی تصویر کی تعریف کی۔ اس موقع پرخاتون نے خصوصی لباس زیب تن کررکھا تھا جسے عام طور پرقومی دن کے موقعے پر پہنا جاتا ہے۔ اس کے الفاظ ہیں کہ "دنیا میں وطن کی محبت سے زیادہ میٹھی کوئی چیز نہیں ہے۔"

پچپن سالہ خاتون کے بیٹے نے بتایا کہ ان کی والدہ 13 سال سے زائد عرصے سے بستر علالت پرہیں وہ اپنی جسمانی تکالیف کے باوجود وطن اور اہل وطن سے بے پناہ محبت کرتی ہیں۔

اس نے اشارہ کیا کہ اس کے بھائی نے اسے عطیہ کرنے کا ارادہ کیا تھا، لیکن قسمت تیز تھی۔ وہ پانچ سال قبل پروسیجر مکمل ہونے سے پہلے ہی انتقال کر گئے تھے، جس کے بعد ڈاکٹروں نے انہیں یقین دلایا کہ اس کی صحت کی خرابی کے باعث موجودہ دور میں عطیہ کرنا ممکن نہیں ہے۔

بیٹے نے کہا: "اگر معاملہ اجازت دیتا ہے، تو ہم سب عطیہ کرنے کے لیے تیار ہیں اور واشنگ مشینوں سے اس کی تکالیف کو ختم کریں گے۔ یہ کم از کم ہم ایک عظیم ماں کو پیش کر سکتے ہیں، جس نے ہمارے لیے پرورش کی، محنت کی اور راتیں جاگیں۔ "

انہوں نے بتایا کہ وہ وزارت صحت کے خرچے پر ریاض کے ایک پرائیویٹ سینٹر میں ڈائیلاسز کروا رہی ہیں اور موجودہ دور میں ان کی صحت کی حالت الحمد للہ بہتر ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز سعودی عرب کا قومی دن پورے ملی جوش وجذبےسے منایا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں