سعودی پولیس اہلکار کو ٹکر مارنے والے گاڑی کا ڈرائیور گرفتار

ملزم کو معاف کرنے کے بارے میں کچھ کہنا قبل از وقت ہے:متاثرہ خاندان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گذشتہ جمعہ کے روز سعودی عرب میں ایک پولیس اہلکار اس وقت گاڑی کی ٹکر سے جاں بحق ہوگیا تھا جب وہ ایک خاتون اور اس کے بچے کو مصروف شاہراہ پار کرانے کے بعد واپس اپنی ڈیوٹی کی جگہ پر آ رہا تھا۔ اس واقعے کی ایک ویڈیو بھی سوشل میڈیا پروائرل ہوئی جس پر شہریوں نے افسوس کا اظہار کیا۔ تاہم گاڑی سے ٹکرمارنے والا شخص وہاں سے چلا گیا تھا جسےگرفتار کرلیا گیا ہے۔

فوت ہونے والے پولیس اہلکار فہد الکلیب کے بھائی فہد الکلیب نے انکشاف کیا کہ سکیورٹی سروسز نے ڈرائیور کو گرفتار کرلیا ہے۔اس سے تفتیش ابھی بھی جاری ہے۔اس کا کہنا تھا کہ وہ ملزم کے خلاف دائر درخواست واپس لینے پرغور نہیں کررہے ہیں۔

انہوں نے "اخبار 24" ویب سائٹ پر کہا کہ الاحساء میں شاہ عبداللہ ماحولیاتی پارک کے ساتھ پیش آنے والے حادثے میں سکیورٹی اورقانون نافذ کرنے والے ادارے اپنا راستہ اختیار کریں گے اور یہ کہ کیس کو معاف کرنے کا طریقہ کار قبل از وقت ہے۔

توفیق الکلیب کا کہنا تھا کہ فہد ڈیوٹی پرمامور تھا جب اسے ایک خاتون اور بچے کو سڑک پار کرانا پڑی۔ وہ انہیں سڑک پار کرانے کے بعد واپس اپنی پولیس وین کی طرف آرہا تھا کہ ایک تیز رفتار کار ڈرائیور جو جنونی طریقے سے کار چلا رہا تھا۔ کار بے قابو ہوکرفہد کو ٹکراگئی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوئے اور اسپتال پہنچنے کے بعد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔

توفیق نے بتایا کہ مجھے فون کے ذریعے بتایا گیا کہ فہد حادثے میں زخمی ہیں مگرجب ہم اسپتال پہنچے تو پتا چلا کہ وہ دم توڑ گئے ہیں۔

توفیق نے بتایا کہ اپنے کام کے ختم ہونے سے آدھا گھنٹہ پہلے اس کے بھائی نے ایک خاتون کی مدد کی جو مین اسٹریٹ سے پارک کے گیٹ کی طرف جانا چاہتی تھی۔

فہد الکلیب کے حادثے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر غیرمعمولی طورپر وائرل ہوئی اور اس حادثے پرشہریوں نے افسوس کا اظہار کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں