ایران کو آئی اے ای اے کیساتھ معاہدہ کی پاسداری کرنا چاہیے : سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے ایران کے ایٹمی پروگرام کی نگرانی میں بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کردار پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کو چاہیے کہ ایجنسیی کے ساتھ ہونے والے حفاظتی معاہدے کی مکمل پاسداری کرے ۔

جوہری عدم پھیلاؤ کا معاہدہ

ویانا میں انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی کی جنرل کانفرنس سے پہلے اپنی تقریر میں انہوں نے کہا کہ سعودی عرب جوہری عدم پھیلاؤ کے معاہدے کی شقوں پر عمل کی اہمیت پر زور دیتا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ سعودی عرب ایجنسی کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے تاکہ جوہری توانائی کو قومی توانائی کے پول میں حصہ ڈالنے کے قابل بنایا جا سکے۔

پرامن ایٹمی ٹیکنالوجی کا حق

انہوں نے کہا سعودی عرب کو پرامن جوہری ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھانے کا حق حاصل ہے۔ اسی تناظر میں جوہری ٹیکنالوجی کے شعبہ میں سعودی انسانی صلاحیتوں کو بڑھانے کے پروگراموں کو بڑھایا جارہا ہے۔

قابل ذکر امر یہ ہے کہ حفاظتی معاہدے کے تحت بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی نے کئی مرتبہ ایران کو درخواست کی ہے کہ وہ ان غیر اعلانیہ مقامات کو بند کردے جن کے متعلق شبہ ہے کہ وہاں ایٹمی سرگرمیاں جاری ہیں تاہم ایران ایجنسی کی ان سفارشات سے راہ فرار اختیار کرتا چلا آرہا ہے۔ ایجنسی کی جانب سے یہ مطالبہ اس لئے کیا جارہا ہے کہ 2015 کا جوہری معاہدہ بحال کیا جاسکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں