جنوب مشرقی ایران میں مسلح افراد سے جھڑپوں میں پاسداران کا اہم کمانڈر ہلاک

بندوق برداروں نے انٹیلی جنس چیف علی موسوی کو ایک مسلح جھڑپ کے دوران زخمی کر دیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب کے سینئیر کمانڈر اور پاسداران کے ایک انٹیلی جنس چیف علی موسوی کا انتقال ہو گیا ہے۔ کمانڈر علی موسوی کو ایرانی حکومت کے مخالف بندوق برداروں نے ایران کے جنوبی سیستان کے علاقے میں ایک مسلح جھڑپ کے دوران زخمی کر دیا تھا۔

کمانڈر علی موسوی کے بارے میں سرکاری میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ زخموں کی تاب نہ لا کر جمعہ کے روز جان دے دی۔ انہیں بندوق برداروں کے ساتھ جھڑپ کے دوران سینے میں گولی لگی تھی۔ یہ واقعہ صوبہ سیستان کے شہر زاہدان میں پیش آیا تھا۔

جمعہ کے روز سرکاری خبر رساں ادارے ’’تسنیم‘‘ نے رپورٹ کیا ہے مسلح جنگجووں نے ان پر ایک پولیس تھانے میں فائرنگ کی تھی۔ کمانڈر علی موسوی سیستان کے علاقے میں پاسداران کے انٹیلی جنس کے سربراہ کے طور پر تعینات تھے

واضح رہے زاہدان ایرانی بلوچستان سیستان کا صوبائی دارالحکومت ہے۔ دوسری جانب ایران میں بائیس سالہ کردش خاتون مہیسہ امینی کی پولیس حراست میں ہلاکت کے بعد سے بد امنی کی ایک بڑی لہر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں