انٹرنیشنل کافی ڈے پر سعودی عرب میں ’’قہوہ ایوارڈ‘‘ جاری کرنے پر غور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یکم اکتوبر کو ’’انٹرنیشنل کافی ڈے‘‘ کے موقع پر سعودی عرب میں یہ دن قہوہ کے لئے مختص کرنے اور سالانہ ’’قہوہ ایوارڈ ‘‘ جاری کرنے کی سفارش کردی گئی۔

وزارت ثقافت کے زیر اہتمام جازان شہر میں "انٹرنیشنل فورم فار دی سسٹین ایبلٹی آف سعودی قہوہ " کی سرگرمیاں یکم سے شروع ہوکر 2 اکتوبر کو اختتام پذیر ہوئیں۔ اس تقریب کا مقصد سعودی قہوہ ، اس کی تیاری ، برقرار رہنے کی صلاحیت اور کافی ڈے پر عالمی اعداد و شمار کو اجاگر کرنا تھا۔

دو روزہ تقریب میں مختلف سیشنز میں فورم میں متعدد سفارشات پیش کی گئیں۔ تقریب میں عالمی کافی تنظیم میں سعودی عرب کے الحاق کی اہمیت، تجربات کے تبادلے، عالمی سطح پر سعودی قہوہ کی موجودگی بڑھانے ، تحقیق کے شعبہ میں عالمی تنظیموں سے تعاون میں اضافے ، قہوہ کی پیداوار کی قومی صلاحیت کو بڑھانے اور دیگرامورپر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ماہرین اور شعبہ سے وابستہ افراد نے سعودی قہوہ کے لئے ایک دن مخصوص کرنے، سعودی قہوہ کیلئے الیکٹرانک میگزین کے اجرا اور قہوہ کے شعبہ میں ترقی کیلئے بہترین کوششیں کرنے پر سالانہ ایوارڈ دینے کی تجاویز پیش کیں۔

وزارت ماحولیات، پانی اور زراعت کے ایک پروچکیٹ کوآرڈینیٹر نایف المطیری نے کہا سعودی عرب میں زرعی چھتوں کی بحالی کا ایک منصوبہ جاری ہے۔ اس منصوبہ میں تقریبا 975 ہیکٹر رقبہ سے براہ راست 9 ہزار سے زائد افراد فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ سعودیہ کے جنوبی علاقوں میں قہوہ کی فصل سمیت کئی اقسام کی فصلوں کے لیے چھتوں سے فائدہ اٹھایا جارہا ہے۔ پانی کو ذخیرہ کرنے کی نئی تکنیکس پر مبنی منصوبوں پر بھی کام جاری ہے۔

نیشنل سینٹر فار ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آف سسٹین ایبل ایگریکلچر کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل برائے نالج اینڈ کمیونیکیشن راضی الفریدی نے بتایا کہ کافی دنیا میں تیل کے بعد دوسری سب سے بڑی تجارت کی جانے والی اجناس میں سے ایک ہے۔ عالمی کافی مارکیٹ کی قیمت 102 ارب ڈالر تک پہنچ گئی۔ توقع ہے کہ کافی مارکیٹ 2022 سے لیکر 2026 کی مدت میں 4.28 فیصد کی شرح سے ترقی کرے گی۔

فورم کے آخری سیشن میں ایک ورکنگ پیپر پیش کیا گیا جس میں بتایا گیا کہ تقریباً 43 فیصد سعودی بالغ افراد روزانہ 300 ملی گرام سے کم کی شرح سے کیفین کھاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں