ایران کی مشرقی عراق کے علاقے سلیمانیہ پر پھر بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق نے سلامتی کونسل سے اپنی خودمختاری کی حمایت اور اپنی سرزمین پر جارحیت کی مذمت کرنے کا مطالبہ کیا ہے تو اسی دوران ایرانی پاسداران انقلاب کے توپ خانہ نے سرحدی برادوست پہاڑوں میں ایرانی کردستان ڈیموکریٹک پارٹی کے ٹھکانوں پر بمباری کردی ہے۔

اس کی اطلاع کردش ہینگاؤ ہیومن رائٹس آرگنائزیشن نے بدھ کے روز دی۔

آرگنائزیشن نے ٹوئٹر پر کہا کہ ایرانی پاسداران انقلاب نے کل رات کردستان فری لائف پارٹی کے اڈوں پر بھی بمباری کی جو ایرانی سرحد کے قریب واقع عراقی صوبہ سلیمانیہ میں پینجوین ضلع کے قریب واقع ہیں۔

اربیل کے مشرق میں بھی بمباری

عراقی کردستان کے مقامات پر ایک کے بعد ایک حملے کئے گئے ہیں۔

پاسداران انقلاب نے اعلان کیا کہ اس نے اربیل گورنری کے شمال مشرق میں ہلگرد پہاڑوں کے مختلف مقامات پر میزائل برسائے اور توپ خانہ سے حملے کئے ہیں۔ اس کے علاوہ اس کے 6 مہاج ڈرونز نے بھی حملے کئے ہیں۔

واضح رہے گزشہ ہفتے ایرانی پاسداران انقلاب کی زمینی افواج کے کمانڈر محمد باکبور نے اعلان کیا تھا کہ ایران نے عراقی کردستان کے 40 سے زائد مقامات پر 70 سے زیادہ بیلسٹک میزائل داغے اور درجنوں ڈرون حملے کئے اور ان حملوں میں درجنوں افراد ہلاک اورزخمی ہوگئے ہیں۔

تہران اکثر شمالی عراق کے کچھ علاقوں پر بمباری کرتا ہے جہاں ایرانی کرد اپوزیشن جماعتوں نے ٹھکانے بنا رکھے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں