جنین میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی بچہ شہید،امسال فلسطینی شہدا کی تعداد 165ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی وزارت صحت نے منگل کو فلسطینی بچے 12 سالہ محمود سامودی کی موت کا اعلان کردیا، محمود کو 28 ستمبر کو صہیونی قابض فوج نے جنین شہر اور مہاجر کیمپ پر دھاول بول کر شدید زخمی کردیا تھا۔ اس دن اسرائیلی فوجیوں سے چھڑپوں میں 4 فلسطینی نوجوان شہید اور 44 زخمی ہوگئے تھے۔

12 سالہ معصوم محمود سامودی کی شہادت کے بعد رواں سال کے دوران اب تک فلسطینی شہداء کی تعداد 165 ہو گئی ہے۔

دریں اثنا اسرائیلی فوجیوں اور یہودی آباد کاروں کے الخلیل کے مرکز میں حملوں میں متعدد فلسطینی زخمی ہوگئے ہیں۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ سفا ک اسرائیلی فوجیوں کی حفاظت میں مسلح آباد کاروں نے تل الرمیدہ اور الشہداء سٹریٹ کے پڑوس میں شہریوں پر حملہ کیا ۔ آباد کاروں نے فلسطینی شہریوں پر پتھر اور خالی بوتلیں پھینکیں اور ان پر کالی مرچ گیس کا چھڑکاؤ کیا جس سے 8 فلسطینی زخمی ہوگئے۔

سلفیت گورنری کے مغرب میں بدیہ قصبے کے مغرب میں واقع خلۃ حسان میں زیتون چننے کے دوران آباد کاروں نے ایک خاندان پر حملہ کرکے دو فلسطینیوں کو زخمی کردیا۔

اسرائیلی فوج نے مقبوضہ بیت المقدس کے شمال مشرق کے مضافاتی علاقے السلام میں بھی دھاوا بولا اور دو فلسطینیوں کو زخمی کردیا۔ رام اللہ میں اسرائیلی فوج نے چار فلسطینیوں کو گرفتار کرلیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں