مصر: ایک اوردوشیزہ کوسابق منگیتر نےتعلقات منقطع کرنے پرقتل کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر میں ایک اور دوشیزہ سابق منگیتر کے ہاتھوں موت کی وادی میں اترگئی ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق 20 سالہ مصری خاتون نے اپنے سابق منگیتر سے تعلقات منقطع کرلیے تھے جس کے بعد وہ اسے قتل کی دھمکیاں دے رہا تھا اور اس نے گلا دبا کر دوشیزہ کو موت کی نیند سلادیا ہے۔

مقامی نیوز ویب سائٹ مصراوی کے مطابق مقتولہ خاتون کا نام خلودالسیّد فاروق درویش ہے۔انھیں پورٹ سعید گورنری میں واقع ان کے گھر میں قتل کیا گیا ہے۔

پولیس نے مشتبہ قاتل کو گرفتارکرلیا ہے اور اس کی شناخت اس کے ابتدائی نام ایم ایس سے کی گئی ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ قاتل نے شادی سے انکار پرخلود درویش کو قتل کرنے کا اعتراف کرلیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مقتولہ نے ان افواہوں کے بعد اپنے منگیتر سے منگنی توڑدی تھی کہ وہ منشیات کے استعمال کا عادی ہے۔

مصراوی نے لکھا ہے کہ ایم ایس نے خلود درویش کو اپنے ساتھ رہنے کے لیے قائل کرنے کی کوشش کی مگر وہ ہمیشہ اس سے دور رہنے کی کوشش کرتی تھی۔

وہ جس فیکٹری میں کام کرتی تھی، وہاں اس کے ساتھی عینی شاہدین نے بتایا کہ ایم ایس نے جرم کے ارتکاب سے ایک روز قبل درویش کو سنگین نتائج کی دھمکی دی تھی۔اس پر خلود نے اگلے دن کام پر نہ جانے کا فیصلہ کیا کیونکہ اسے خدشہ تھا کہ وہ ایم ایس نقصان پہنچا سکتا ہے۔

تاہم،جب ایم ایس نے اسے کام پر نہیں پایا، تو وہ اس کے گھر چلا گیا اور مبیّنہ طورپراس کا گلا گھونٹ کر ہلاک کر دیا۔

خلود درویش مصر میں خواتین کے خلاف سنگین جرائم کے سلسلے میں تازہ شکار ہیں۔اس طرح کی قتل کی وارداتوں نے گذشتہ چند ماہ کے دوران میں مصر کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔

ایسے ہی ایک اور واقعہ میں 19 سالہ امانی عبدالکریم الغزار کا قتل ہوا تھا۔انھیں ستمبر میں احمد فتحی امیرہ نے اپنے ساتھ منگنی سے انکارپر قتل کردیا تھا۔

ایک اور کیس میں 21 سالہ مصری طالبہ نیّرہ اشرف کو جون میں ایک شخص نے اسی بنا پر قتل کر دیا تھا کہ مقتولہ نے اس کی شادی کی پیش کش ٹھکرا دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں