سعودی عرب: بذریعہ واٹس ایپ خاتون کو ورغلانے کی کوشش کرنیوالے کو 5سال قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مشرقی سعودی عرب کے علاقے الاحسا میں فرسٹ جوائنٹ کریمنل چیمبر نے ایک شادی شدہ خاتون کو واٹس ایپ کے ذریعے ورغلانے کی کوشش کرنے پر ہراساں کرنیوالے کو 5 سال قید کی سزا سنائی ۔ پبلک پراسیکیوشن نے ملزم پر ایک شادی شدہ خاتون کو ہراساں کرنے اور اسے ٹیکنالوجی کے ذریعے بہکانے کی کوشش کرنے کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملزم نے واٹس ایپ کے ذریعہ جنسی مفہوم کے ساتھ ایسے الفاظ بھیجے جن میں بے حیائی کو مدعو کیا گیا تھا۔ ملزم نے عوامی اخلاقیات اور نجی زندگی کے تقدس کو مجروح کیا۔ ملزم نے اپنی ملازمت کے فرائض کی انجام دہی کے دوران خاتون کا فون نمبر حاصل کیا۔ اس طرح اس نے اس سالمیت کی خلاف ورزی بھی کی ہے جس میں سیکورٹی اور ذاتی معلومات کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

اعتراف جرم

چیمبر نے واقعے کی تفصیلات کا جائزہ لیا اور دیکھا کہ ملزم نے اعتراف بھی کیا تھا۔ اس نے اعتراف کیا تھا کہ اس نے خاتون کو پیغامات بھیجے تھےاور یہ کہ جس نمبر سے پیغامات بھیجے گئے وہ نمبر بھی اسی کے زیر استعمال تھا۔ واضح جنسی مفہوم والے الفاظ کے ساتھ عورت کے ساتھ بات چیت کرنا اور اسے بے حیائی کا ارتکاب کرنے کی دعوت دینا اور شوہر سے چھپ کر اس سے گفتگو کرنا پایا گیا۔

ہراساں کرنا اسلامی طور پر حرام

عدالت نے گفتگو اور مدعا علیہ کے اعترافی بیان کا بھی جائزہ لیا اور اس کی طرف سے جاری کردہ شریعت اور قانونی مجرم پر غور کیا اور اسے 5 سال قید کا حکم دے دیا۔ ان پانچ سالوں میں مقدمہ کے زیر التوا رہنے کے دوران اس کی حراست کی مدت بھی شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں