ایک ہفتہ میں اسرائیل کی شام پر تیسری غارت گری، دمشق کے نواحی مقامات کو نشانہ بنایاگیا

شامی میڈیا: فضائی دفاع نے متعدد میزائلوں کو مار گرایا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب ایک مرتبہ پھر اسرائیلی نے دمشق کے اطراف کے مقامات کو نشانہ بنا ڈالا ہے۔ جمعہ کے بعد سے اسرائیل نے شام میں یہ تیسری غارت گری کی ہے۔

اے ایف پی کے ایک نمائندے نے دمشق میں دھماکوں کی آوازیں سننے کی اطلاع دی۔ دوسری طرف شام کے سرکاری میڈیا نے اعلان کیا کہ فضائی دفاع نے "دشمن" کے متعدد میزائلوں کو مار گرایا ہے۔

شام کی وزارت دفاع نے ایک بیان میں ایک فوجی ذریعہ کے حوالے سے اعلان کیا کہ اس حملے میں "دمشق شہر کے آس پاس کے کچھ مقامات کو نشانہ بنایا گیا، ہمارے فضائی دفاع نے میزائلوں کا سامنا کیا اور ان میں سے کچھ کو مار گرایا، شام میں صرف مادی نقصان ہوا‘‘ وزارت دفاع نے واضح نہیں کیا کہ ہدف کے مقامات کیا تھے۔

دریں اثنا شامی انسانی حقوق رصد گاہ نے بتایا ہے کہ اسرائیلی حملوں میں دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب پوائنٹس کو نشانہ بنایا گیا۔ رصدگاہ نے یہ نہیں بتایا کہ یہ مقامات شامی فوج کے متعلق تھے یا لبنانی حزب اللہ کے وفادار جنگجوں سے متعلق تھے۔

آبزرویٹری کے مطابق اسرائیلی میزائلوں نے دمشق کے جنوبی عرب دیہی علاقوں میں دمشق انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے علاقے میں فوجی مقامات کو نشانہ بنایا۔ کم از کم 4 میزائل برسائے گئے۔ الست زینب اور ایئرپورٹ کے علاقوں میں پر تشدد دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ تاہم جانی نقصان کی اطلاعات موصول نہیں ہوئیں۔

واضح رہے جمعہ 21 اکتوبر کو بھی اسرائیلی فضائی حملوں نے دمشق کے نواحی مقامات کو نشانہ بنایا تھا، پیر کو دن کے اوقات میں دوبارہ حملے کئے گئے۔ ان حملوں میں ایک فوجی زخمی ہوا تھا۔

گزشتہ برسوں کے دوران اسرائیل نے شام میں سینکڑوں فضائی حملے کیے ہیں جن میں شامی فوج کے ٹھکانوں، ایرانی اہداف اور لبنانی حزب اللہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ اسرائیل شاذ و نادر ہی شام پر اپنے کسی حملے کا اعتراف کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں