سعودی عرب میں شدید سردی کا چلّہ ’’مربعانیۃ الشتاء‘‘ شروع

یہ سردیوں کا اصل آغاز اور اس کی مدت 39 دن ہے، ستاروں اکلیل، قلب اور شولہ میں سے ہر ایک کے 13 دن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں بدھ 7 دسمبر کو سرد دن کے ساتھ ہی اصل سردی کا آغاز ہوگیا۔ سعودی عرب میں موسم سرما کے دنوں کو ’’مربعانیۃ الشتاء‘‘ یا سردیوں کا چلہ بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ سردیاں 39 دن تک پھیلی ہوئی ہیں۔

موسم اور آب و ہوا کے تحقیق کار عبد العزیز الحصینی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے وضاحت کی کہ موسم

موسم سرما کے دنوں کیلئے ’’مربعانیۃ‘‘ کی اصطلاح اس لئے وضع کی گئی تھی کہ فلکیاتی نقطہ نظر سے سردیوں کی مدت چالیس روز کے قریب تھی۔

انہوں نے کہا کہ اس چلّہ میں تین ستارے آتے ہیں 13 دن اکلیل، اس کے بعد 13 دن قلب اور آخر میں 13 دن شولہ ظاہر ہوتا ہے۔ اس طرح یہ 39 دن بنتے ہیں۔ اسی وجہ سے اسے مربعانیہ کہا جاتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ شدید سردی کے دن ہوتے ہیں، خاص طور پر اگر کسی قطبی یا سائبیرین ہوائیں چل جائیں تو اس موسم میں درجہ حرارت صفر سے 50 سے 60 درجہ نیچے تک چلا جاتا ہے۔ اللہ کے فضل سے یہ ہوائیں ہم تک نہیں پہنچ پاتیں۔ ان ہواؤں کی وجہ سے دنیا کا ایک چھوٹا سا حصہ متاثر ہوتا ہے۔ اس سال ’’مربعانیۃ‘‘ کے تحت درمیانی درجہ کی سرد شمال، وسطی علاقوں، شمالی مغربی اور مشرقی علاقوں میں ہوگی۔

سردی کی لہر کا آغاز

انہوں نے کہا کہ توقع کی جاتی ہے کہ سردی کی لہر اس ہفتے کے آخر اور اگلے ہفتے کے دوران شروع ہوگی۔ یہ موسم وسطی علاقوں میں گندم لگانے کے لئے موزوں ہے ۔

الحصینی نے بتایا کہ بدھ اس کے پہلے ستارے کے 13 دنوں کا پہلا دن ہے۔ اس میں بارش ہو تو کھمبی ’’ٹرفل‘‘ اگتی ہے۔ ان دنوں میں پرندے اڑ جاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں