9 ایرانی خواتین 2022 کی دنیا کی 100 بااثر خواتین میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی "ٹٍائم میگزین" نے خواتین کے احتجاج کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین تعلیم، آزادی اورسیکولرازم کے میدان میں خواتین کلیدی کردارادا کررہی ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران میں اب جو کچھ ہو رہا ہے وہ ماضی سے مختلف ہے۔ کیونکہ "آج ان تمام لوگوں کی خواہشات جو تبدیلی چاہتے ہیں 'عورت، زندگی، آزادی' کے نعروں سے عیاں ہیں۔"

میگزین نے 2022 کے دوران دنیا کی 100 متاثر کن اور بااثر خواتین کی فہرست میں متعدد ایرانی مظاہرین اور کارکنوں کا انتخاب کیا۔ اس فہرست میں جوہر عشقی، نرگس محمدی اور سبیدہ قلیان، ایلناز ریکابی، نیلوفر بیانی،زر امیر براہیمی اور نازنین زاغریریٹکلف شامل ہیں۔

میگزین نے مزید کہا کہ "ایرانی خواتین کو 9 دیگر شخصیات کے ساتھ اس باوقار میگزین کے سرورق کے لیے منتخب کرنے کے لیے نامزد کیا گیا تھا جبکہ یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلینسکی کو روس کے خلاف ان کی "مزاحمت" کے لیے سال کی بہترین شخصیت کے طور پر منتخب کیے گئے۔

امریکی میگزین کی سو خواتین کی فہرست میں شامل ایرانی خواتین

نرگس محمدی

صحافی، نوبل امن انعام کی نامزد اور انسانی حقوق کی محافظ مرکز کی نائب صدر نرگس انسانی حقوق کی سرگرمیوں اور خواتین کے حقوق کی وکالت کی وجہ سے اس وقت تہران کے شمال میں واقع ایون جیل میں قید ہیں۔ انہیں دیگر قید خواتین کی طرح حکومتی مظالم پر آواز بلند کرنے پر تشدد کا نشانہ بناجاتا رہا ہے۔

نازنین زغری-ریٹکلف

نازنین ایک ایرانی خاتون ہیں مگران کے پاس برطانوی شہریت بھی ہے۔ میگزین نے انہیں ایک فلاحی کارکن کے طور پر پیش کیا جو برسوں سے اپنے خاندان سے دور ایرانی جیلوں میں قید ہیں۔

جوہر عشقی

جوہر عشقی ایک سماجی کارکن ہیں۔ انہوں نے اپنے بیٹے ستار بہشتی کو 10 سال قبل اپنی بلاگ پوسٹوں کی وجہ سے کھو دیا تھا۔ ایران میں استحکام اور برداشت کی علامت کے طور پر اور میگزین نے انہیں ایران کی ان ماؤں کے طور پر پیش کیا جو اپنے بچوں کے قاتل کے لیے انصاف کا مطالبہ کرتی ہیں۔"

سبیدہ قالیان

سبیدہ قالیان ایک سیاسی کارکن ہیں جنہیں صوبہ خوزستان میں کارکنوں کے حقوق کی حمایت کرنے پر پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ اسے "خواتین قیدیوں کی آواز" کہا جاتا ہے اور اس نے "تشدد" اور "ناانصافی" کے بارے میں ایک کتاب لکھی ہے۔

ناز رکابی

ایک ایرانی کھلاڑی جس نے جنوبی کوریا میں بغیر ہیڈ سکارف کے ایشین راک کوہ پیمائی کے مقابلے میں حصہ لیا تھا، ایرانی مظاہرین میں مقبولیت حاصل کر رہا ہے۔

نیلوفر بیانی

مجھے کم از کم 1,200 گھنٹے تک انتہائی شدید قسم کے نفسیاتی، جذباتی اور جسمانی تشدد اور جنسی دھمکیوں کا نشانہ بنایا گیا۔

زرامیر ابراہیمی

فلم "دی سیکرڈ اسپائیڈر" میں اپنے کردار کے لیے کانز فلم فیسٹیول میں بہترین اداکارہ کا ایوارڈ جیتنے والی پہلی ایرانی خاتون زرامیر ابراہیمی ہیں۔

رویا بیرائی ولیلی

ایران میں احتجاج میں پیش پیش رہنے والی لڑکی ایرانی عوامی بغاوت میں شامل ہونے کے لیے بال باندھ کر میدان میں آئیں۔

رویا پیرائی

مغربی ایران کے شہر کرمانشاہ میں سکیورٹی فورسز کی گولی سے ہلاک ہونے والی اپنی ماں کو کھونے والی 62 سالہ لڑکی نے اپنی والدہ کی قبر پر جاتے ہوئے اپنے بال کاٹ لیے اور احتجاج میں ایک علامت بن گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں