او آئی سی کے سیکرٹری جنرل 10 دسمبر کو پاکستان، آزاد کشمیر کا دورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے سیکرٹری جنرل حسین براہیم طحہٰ وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کی دعوت پر 10 سے 12 دسمبر تک پاکستان اور آزاد جموں و کشمیر کا دورہ کریں گے۔ دفتر خارجہ کے ترجمان کی جانب سےجاری بیان کے مطابق او آئی سی کے سیکرٹری جنرل دورے کے دوران 5 رکنی وفد کی قیادت کریں گے، نومبر 2021 میں عہدہ سنبھالنے کے بعد یہ ان کا پاکستان کا پہلا باقاعدہ دورہ ہوگا۔

اپنے دورے کے دوران اسلامی تعاون تنظیم کے سیکرٹری جنرل وزیراعظم پاکستان سے ملاقات کریں گے اور وزیر خارجہ سے وفود کی سطح پر ملاقاتیں کریں گے، وہ وفاقی وزیر امور کشمیر وگلگت بلتستان، وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی اور وزیر تجارت سے بھی ملاقات کریں گے۔ او آئی سی کے سیکرٹری جنرل آزاد جموں وکشمیر کا بھی دورہ کریں گے۔ دو طرفہ بات چیت کے دوران او آئی سی کے سیکرٹری جنرل اور وزیر خارجہ او آئی سی کے ایجنڈے پر موجود تنازعہ جموں و کشمیر، اسلامو فوبیا اور افغانستان میں انسانی صورتحال سمیت دیگر امور پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔

بیان کے مطابق ان کے اس دورے سے او آئی سی کے رکن ممالک کے درمیان اقتصادی، سماجی اور تکنیکی تعاون کے اہم امور پر تبادلہ خیال کا موقع بھی فراہم ہوگا۔ پاکستان او آئی سی کے بانی رکن کی حیثیت سے تنظیم میں اسلامی یکجہتی، اتحاد اور مکالمے کے فروغ کے لیے کوششیں جاری رکھے گا۔ اسلامی تعاون تنظیم کے وزراءخارجہ کونسل کے سربراہ کی حیثیت سے پاکستان نے او آئی سی کے رکن ممالک کے درمیان تجارت، کامرس، فوڈ سکیورٹی، سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبے میں تعاون کے علاوہ تنازعات کو حل کرنے کے لیے او آئی سی کے امن اور سلامتی کے ڈھانچے کو مکمل طور پر فعال کرنے کے لیے کام کیا ہے، افغانستان کو سنگین انسانی امداد فراہم کرنے کے لیے او آئی سی ٹرسٹ فنڈ قائم کیا ہے

جبکہ اسلامو فوبیا کے گھنائونے مظاہر سے نمٹنے اور تعاون کو فروغ دینے کے لیے قائدانہ کردار فراہم کیا ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ او آئی سی کے سیکرٹری جنرل کا دورہ اس بات پر تبادلہ خیال کا موقع فراہم کرے گا کہ او آئی سی ایک ارب 90 مسلمانوں کی امنگوں کو پورا کرنے کے لیے کس طرح خود کو مزید متحرک کرسکتی ہے جن کی وہ نمائندگی کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں