سیاحتی سرگرمیاں: سعودی عرب کو ان سردیوں میں 15 ارب ریال کا منافع متوقع

متعدد سعودی تاریخی اور ورثے کے مقامات پر 20 سے زیادہ سیاحتی سرگرمیاں شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سردیوں کے موسم کی آمد کے ساتھ ہی سعودی عرب کے بہت سے شہروں اور علاقوں میں ان دنوں قابل ذکر سیاحتی سرگرمیاں شروع کی گئی ہیں۔ ایک ایسے وقت میں جب متعدد سیاحتی اور تاریخی مقامات پر ہونے والے واقعات، وہاں کا موسم اور سرگرمیاں دنیا کے عظیم سیاحوں کی توجہ حاصل کرتا ہے موسمیاتی تنوع والے سعودی عرب میں تاریخ اور ورثہ کے متعدد مقامات سیاحوں کیلئے اہم ہیں۔ سعودی عرب میں بڑا ثقافتی ذخیرہ موجود ہے۔

اس سال سعودی موسم سرما میں بہت سے سرگرمیاں شروع ہیں جن میں ریاض کا سیزن اس کے بین الاقوامی تفریحی ماحول کے ساتھ ہے۔ ژالہ باری کے موسم کے علاوہ ریاض سیزن سیاحوں کو اپنے مختلف کھیلوں کے ٹورنامنٹس، سرگرمیوں اور مختلف تفریحی پروگراموں کے ساتھ اپنی طرف متوجہ کرتا ہے۔ اس سیزن میں ایڈونچر، دریافت اور فطرت اور تاریخ سے لطف اندوز ہونے کے مواقع موجود ہیں۔

وزارت ثقافت وزارت سیاحت کے تعاون سے 31 دسمبر تک الاحساء، جدہ اور ریاض کے متعدد تاریخی اور ورثے والے مقامات پر 20 سے زیادہ سرگرمیاں منعقد کر رہی ہے۔ اس کے علاوہ سیاحت، تفریح اور ثقافت پر مبنی متعدد سرگرمیاں ہیں جنہوں نے سعودی عرب کو سیاحوں کیلئے مقناطیس بنا دیا ہے۔

سعودی ایسوسی ایشن فار ٹریول اینڈ ٹورازم کے ایک رکن ہانی العمیری نے توقع ظاہر کی کہ سعودی موسم سرما کے دوران سعودی عرب میں سیاحت کا شعبہ تقریباً 95 فیصد کی شرح سے سیاحوں کی توجہ حاصل کرے گا اور اس کا منافع ان سردیوں میں 15 ارب ریال سے بڑھ جائے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سال سعودی عرب کے موسم سرما میں سیاحت سے متعلق معاون شعبوں کی بحالی شامل ہو گی جیسے نقل و حمل، ریستوراں اور مختلف شہروں میں تفریحی سرگرمیاں اور تفریحی مقامات پر سرگرمیاں ہوں گی۔ ساحل، سمندری علاقے اور زمیین پارکس پر تفریحی سرگرمیاں جاری رہیں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں