لبنان میں اقوام متحدہ کے امن مشن پر حملہ قابل مذمت: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے لبنان میں اقوام متحدہ کے امن مشن میں شامل آئرش فوجی کے قتل کی شدید مذمت کی ہے اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

سعودی وزارت خارجہ نے جمعہ کے روز کہا کہ مملکت جنوبی لبنان میں اقوام متحدہ کی عبوری فورس پر حملے کی شدید مذمت کرتی ہے۔ اس حملے میں ایک آئرش فوجی ہلاک اور دیگر زخمی ہوگئے تھے۔

وزارت خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب اس حملے کے حالات کی فوری اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ کرتی ہے۔ سعودی عرب ہر قسم کے تشدد کو مکمل طور پر مسترد کرتا اور یو این امن مشن کی حمایت کرتا ہے۔

جمعرات کے روز، ایک لبنانی عدالتی ذریعہ نے اطلاع دی کہ ایک فوجی مشین گن سے سات گولیاں جنوبی لبنان میں اقوام متحدہ کی عبوری فورس میں کام کرنے والی آئرش بٹالین کی گاڑی میں پیوست ہوگئیں اور ان میں سے ایک پیچھے سے ڈرائیور کے سر میں لگی۔

ذرائع نے "ایجنسی فرانس پریس" کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ گاڑی چلانے والے فوجی اس کی سیٹ کو چیرتے ہوئے پیچھے سے گولی لگی جس سے اس کی فوری موت ہوگئی۔

گولی لگنے کے بعد، گاڑی لوہے کے کھمبے سے ٹکرائی، پھر الٹ گئی، جس سے دیگر تین دیگر افراد زخمی ہو گئے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے۔

ذرائع نے وضاحت کی کہ فوجی عدلیہ نے تحقیقات سنبھال لی ہیں۔ ذرائع کے مطابق، فوجی عدالت کے سرکاری کمشنر، جج فادی اکیکی نے فوج کی انٹیلی جنس اور متعلقہ سکیورٹی سروسز کو ضروری اقدامات کرنے، معلومات اکٹھی کرنے اور مجرمانہ شواہد کی درخواست کرنے کا حکم دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں