سعودی عرب میں دانشوروں اور فنکاروں کیلئے ثقافتی مرکز ’’فناء الاول‘‘ کا آغاز

ہر شعبہ زندگی کے افراد کیلئے ثقافتی اور علمی مرکز کے طور پر کام کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ثقافتوں کے درمیان تخلیقی اظہار اور مکالمے کیلئے مقام فراہم کرنا بھی ایک اعلی ثقافتی فضیلت کی نمائندگی ہے۔

اسی ضمن میں سعودی وزارت ثقافت نے دارالحکومت ریاض کے سفارتی کوارٹر میں نئے ثقافتی مرکز "فناء الاول" کا آغاز کردیا ہے۔ یہ مرکز مفکرین اور تخلیق کاروں اور مختلف شعبوں کے ماہرین کو ایک جگہ اکٹھا ہونے کا موقع فراہم کرے گا اور علم کے تبادلے کے پلیٹ فارم کے طور پر کام کرے گا۔

’’پہلے صحن‘‘ کی افتتاحی تقریب کو سعودی وزیر ثقافت شہزادہ بدر بن عبداللہ بن فرحان نے سپانسر کیا تھا ۔ اس موقع پر متعدد دانشور اور فنکار موجود تھے۔ یہ ایک مربوط ثقافتی مرکز ہے جو مختلف مقامات کے آرٹ کی نمائشوں اور ورکشاپس کا انعقاد کرے گا۔ ایک ثقافتی اور علمی مقام کے افراد اور تمام شعبہ زندگی کے افراد کے لئے مرکز کے طور پر کام کرے گا۔

شہزادہ بدر بن فرحان نے افتتاحی تقریب کے دوران اپنی تقریر میں کا کہ "فناء الاول" ثقافتی اور تخلیقی منزل ہے اور نئے ثقافتی مرکز کا افتتاح وزارت کے لئے قابل فخر ہے۔

ریاض شہر کیلئے ’’فناء الاول‘‘ کا قیام رائل کمیشن کے تعاون سے عمل میں آیا۔ اس کو ثقافتی مقام بنایا جائے گا جہاں سعودی ’’ویژن 2030 ‘‘ کے تحت مختلف ثقافتوں کے درمیان تخلیقی اظہار اور مکالمہ کو جگہ دی جائے گی۔ وزارت ثقافت کی حکمت عملی کی بنیاد پر یہ مرکز ثقافتی اور فنکارانہ منظر نامے کو آگے بڑھائے گا اور عالمی ثقافتی تبادلے کے مواقع پیدا کرنے میں معاون ثابت ہوگا۔’’فناء الاول‘‘ سے سعودی عرب کی حیثیت اور اس کی ثقافتی نمائندگی میں اضافہ ہوگا۔

یہ ثقافتی مرکز ڈپلومیٹک کوارٹر میں فرسٹ بینک کی تاریخی عمارت میں واقع ہے جو پہلے سعودی ہالینڈی بینک کے نام سے جانا جاتا تھا۔ یہ سعودی عرب میں کام کرنے والا پہلا تجارتی بینک تھا۔ یہ عمارت 1988 میں ڈیزائن کی گئی تھی اور یہ ڈپلومیٹک کوارٹر کے نمایاں نشانات میں سے ایک ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں