قطر ورلڈ کپ کی شاندار اختتامی تقریب، بلقیس اور وگز کی پرفارمنس نے دلوں کو چھو لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قطر میں ورلڈ کپ کی اختتامی تقریب میں ایک شاندار شو پیش کیا گیا۔ 15 منٹ کی اس مختصر تقریب میں زبردست بصری تکنیک کا استعمال کیا گیا۔ گیت پیش کئے گئے۔ بلقیس اور وگز کی پرفارمنس نے شائقین کے دلوں کو چھو لیا۔ افتتاحی گانوں کے ساتھ کنسرٹ کے منتظمین نے بصری تکنیک کا استعمال کیا۔ اس مظاہرے میں ڈولفن اور وہیل کے حقیقت پسندانہ ماڈل سٹیڈیم کے چاروں طرف پھیلے گئے۔ یہ ایسا منظر تھا کہ مچھلیاں ایسی دکھائی دے رہی تھیں جیسے وہ سٹیڈیم میں اڑ رہی ہوں ۔ اس دلکش منظر نے لوگوں کو محسور کرکے رکھ دیا۔

ابتدائی گانوں میں کئی عرب فنکاروں نے بھی حصہ لیا، خاص طور پر اماراتی بلقیس، عراقی رحمہ ریاض، اور دو مراکشی گلوکار منال اور نورا فتحی شامل ہیں۔

اختتامی تقریب میں نائیجیرین گلوکار ڈیوڈو اور دیگر گلوکاروں کی پرفارمنس شاندار تھی ۔ ورلڈ کپ میں حصہ لینے والے ملکوں کے جھنڈوں اور گیندوں کے ساتھ ڈانس پرفارمنس کی گئی ۔

مصر کے مشہور ریپر "وگز" نے دونوں حصوں کے درمیان وقفے کے دوران اپنا گانا "عز العرب" گا کر داد وصول کی۔ اس کے علاوہ تمیم البرغوثی اور محمد ولد بمبا نے ورلڈ کپ فائنل کی اختتامی تقریب میں نظم ’’عین الرضی ‘‘ پیش کی۔ اختتامی تقریب زیادہ دیر تک نہ چل سکی اور 15 منٹ سے بھی کم وقت کے بعد ختم ہو گئی۔ جس کے بعد فرانس اور ارجنٹائن کے کھلاڑی میچ کے آغاز سے پہلے وارم اپ شروع کرنے کے لئے میدان میں داخل ہوگئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں