امارات میں موسم سرما کے دوران سیاحوں اور ہائیکرز کے لیے ٹاپ فائیو ہائیکنگ ٹریلز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

متحدہ عرب امارات کی پانچ ہائیکنگ ٹریلز موسم سرما میں ہائیکنگ کے لیے تیار ہوگئے۔ امارات میں پہاڑوں کو پیدل تسخیر کرنے کا شوق رکھنے والے نئے اور پرانے سبھی لوگوں کے لیے بھر پورقدرتی نظاروں سے مزین ہائیکنگ ٹریل پورے امارات میں پھیلے ہوئے ہیں۔

امارات میں لوگوں میں یہ شوق اور رجحان حالیہ وبا کے دنوں میں بڑھا ہے۔ جب لوگوں نے پر ہجوم علاقوں سے دور قدرتی ماحول اور مناظر میں اپنی دلبستگی کی جستجو کرنا شروع کی۔

پورے امارات میں پہاڑی اور ساحلی پہاڑی علاقے ان کے لیے جنگلی و پہاڑی حیوانات کے علاوہ رنگ برنگے نباتات کی غیر معمولی کشش لیے ہوئے ہیں۔ یہ دلکش سلسلہ امارات کی ساتوں ریاستوں میں جا بجا نظر آتا ہے۔ ان میں پانچ ہائیکنگ پوائنٹس ٹاپ فائیو میں شمار ہوتے ہیں۔

جبل خفیت :

یہ ہائیکنگ پوائنٹ ابو ظہبی میں ہے۔ ہائیکنگ کرنے والوں کے لیے انتہائی دلچسپی اور رغبت کا حامل ہے۔ ہائکنگ پوائنٹ 1240 میٹر بلند ہے۔ جو ہائیکنگ کرنے والوں کو ایک ان کی استعداد اور شوق کے مطابق ٹریلز فراہم کرتا ہے۔

خدو خال : امارات میں ہائیکنگ کرنے والوں کے لیے چند مشورے اور گر کی باتیں۔ کہیں یا پہلے سے سمجھنے والے ضروری نکات اور احتیاطیں۔ پہاڑوں پر کثرت سے لینڈ اسکیپ موجود ہیں۔ ان میں پتھریلے اور چٹانی بھی راستے بھی ہیں۔ قدرتی چشمے یا جھیلیں بھی راستوں میں موجود ہیں۔

اس جبل خفیت پر ایک اہم ٹریل العین ماونٹین ٹریل ہے۔ اسے عین الجبلی بھی کہتے ہیں۔ یہ ٹریل ہائیکرز کو جبل خفیت کی چوٹی پر لے جاتا ہے اس پر چلنا آسان ہے اور راستہ بھولنے کا امکان کم ہوتا ہے۔ اس پر چلتے ہوئے ہائیکرز کا رنگ برنگے پودوں اور جانوروں سے ٹاکرا ہو سکتا ہے۔ ان مخلوقات میں پرندوں اورچھپکلیاں اور سانپ بھی ہو سکتے ہیں۔

ہائیکر کو چاہیے کہ وہ یہ جان رکھے کہ اسے ہائیکنگ کے دوران اوپر جاتے ہوئے کھڑی اور جھکی ہوئی چٹانی خطوں کا سامنا ہو گا۔ لہذا جوتوں سے لے کر لباس تک میں اس ماحول پو پیش نظر رکھنا ہو گا۔

ہمراہی میں پانی کا ہونا بھی ضروری ہے۔ سوج کی شدت سے بچنے کے لیے رنگ دار چشموں کے علاوہ دوسرے ضروری سامان کا بندو بست بھی ضروری ہو گا۔ ہائیکنگ کرنے والے راستے میں مختصر آرام کا بھی اہتمام کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ واپسی پر بطور خاص ریسٹ سٹاپس ان کے لیے بہت اہم ہیں۔

جبال الحجر :

اس سے متعلق ہائیکنگ ٹریل امارات کے مشرقی حصے میں ہے۔ اس میں ابتدائی درجے کے ہائیکرز سے لے کر تجربہ کار اور مشکل پسند ہائیکرز سبھی کے ذوق کا سامان موجود ہے۔ چٹانی ٹریل ایسے راستوں سے گذرتی ہے جو مختلف مخلوقات کے گھر ہیں۔ ان مخلوقات میں رنگا رنگ کے پودے اور جڑی بوٹیاں بھی ہیں اور جانور بھی۔ خوبصورت مناظر اس ٹریل کو دلکش بناتے ہیں۔

جبل جیس :

یہ ہائیکنگ ٹریک راس الخیمہ میں ہے۔ یہ امارات کی بلند ترین چوٹی کا گھر ہے۔ اس کی ہائیکنگ ٹریل ایک چیلنجنگ ٹریل ہے۔ تجربہ کار ہائیکرز کے لیے یہ بہت دلچسپی کی جگہ ہے۔ اس ہائیکنگ ٹریک پر بھی پہاڑی پودوں کی ورائٹی کے علاوہ پہاڑی حیات بھی موجود ہے۔

وادی قوس قزح :

یہ وادی اپنے رنگوں بھرے مناظر کی وجہ قوس قزح کی وادی کہلاتی ہے۔ یہ ایک پھیلی ہوئی وادی ہے۔ اس کی رنگ برنگی چتانوں کے رنگ ایک غیر معمولی چیز ہیں۔ سرخ ، جامنی ، نارنجی اور پیلے رنگت کی حامل چٹانیں دوسر قوس قزح کی طرح اترتی نظر آتی ہیں۔

ریت کے اونچے اور بڑے ٹیلے بھی اس وادی کی پہچان ہیں۔ یہ باریک ریت کے زروں کو سورج کی مدد سے چمکتا ہوا اجتماع ہے۔ اس وادی میں حتا جبل 1300 میٹر اونچا ہے۔ اس پہاڑی پر موجود ٹریل ہائیکرز کو چوٹی تک لے جاتی ہے۔ رنگوں کی اس وادی میں جونوروں اور پودوں کی موجودگی بھی اس کے حسن کو بڑھانے کا ذریعہ ہے۔

وادی شوکۃ :

یہ حیرت زدہ کر دینے والے پہاڑوں کی وادی ہے۔ اس کے ہائیکنگ ٹریلز پر مختلف درجوں اور تجربوں کے حامل ہائیکرز کو ہائیکنگ کا موقع مل سکتا ہے۔ یہ وادی ایک جانب قالین کی طرح نرم نرم سبزرنگ کی زمین پر مشتمل ہے تو دوسری جانب چٹانی اور پتھریلے راستے ہیں۔

اس میں جانوروں اور پودوں کی بہتات نظر اتی ہے۔ عجب نظاروں سے بھری ہوئی اور قدرتی مناظر کی خوبصورت کے مالامال وادی ہے۔ اس میں ایک اہم ترین ٹریل شوکۃ ڈیم ٹریل ہے۔ یہ ہائیکنگ ٹریل شوکۃ ڈیم تک چلی جاتی ہے پوری شان و شوکت کے ساتھ ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں