کاروباری اداروں کی جانب سے اسرائیلی حکمران اتحاد کی امتیازاورنسل پرستی کی سوچ مسترد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل کے بڑے کاروباری اداروں نے نئی بننے والی حکومت میں شامل شدت پسند جماعتوں کے نسلی امتیاز پر مبنی مطالبات کے مطابق قواعد بنانے سے انکار کر دیا ہے۔

طب و صحت کے شعبے نے سب کو علاج دیتے رہنے کا عندیہ دیا ہے، ہوٹل انڈسٹری نے بھی بلا امتیاز اپنی خدمات سب کے لیے جاری رکھنے کا ارادہ ظاہر کیا ۔ جبکہ بنکوں نے ایک قدم آگے بڑھتے ہوئے نسل پرستی پر یقین رکھنے والے اداروں کو قرضے نہ دینے کا اعلان کیا ہے۔

اتوار کے روز نئے حکمران اتحاد میں شامل جماعت کی رہنما اورٹ سٹروک ایک عوامی ریڈیو کے ذریعے یہ مطالبہ کیا تھا کہ ہوٹلوں اور ڈاکٹروں کو یہ حق ہونا چاہیے کہ وہ مذہب کی بنیاد پر چاہیں تو لوگوں اپنی خدمات دینے سے انکار کر دیں۔

اس سے قبل ایک اور انتہا پسند رہنما نے فلسطینی مسلمانوں کی خواتین کو زچگی کے دوران اسرائیلی ہسپتالوں سے الگ رکھنے کا مطالبہ کر رکھا ہے ۔ فلسطینی خواتین کو یہودی خواتین کے ساتھ طبی خدمات نہ دی جائیں۔

بظاہر اسی کے جواب میں بڑے ہسپتالوں اور شفاخانوں نے کی طرف سے کہا گیا ہے' ہم ایک کا اعلاج کرتے ہیں۔ ' اسی طرح پیر کے روز اسرائیل کے چوتھے بڑے بنک 'اسرائیل ڈسکاونٹ بنک ' نے اس سے بھی آگے بڑھ کو جواب دیا ہے کہ ہنم نے اپنی پالیسی اپ ڈیٹ کی ہےاور اس کے تحت ہم کسی ایسے گروپ یا ادارے کو قرضہ نہیں دیں گے جو دوسروں کے لیے امتیازی سوچ اور عمل اختیار کیے ہوئے ہے۔

بنک کی طرف سے مزید کہا گیا ہے کہ ہم ایسے کسی گروپ کو قرضہ نہیں دین گے جو اپنے گاہکوں کو مذہب، نسل اور صنفی بنیادوں پر امتیازی سلوک کا نشانہ بناتا ہو یا ڈیل کرتا ہو۔

سائبر سکیورٹی سے متعلق کمپنی 'wiz جو کہ چھ ارب ڈالر مالیت کی حامل ہے نے بھی پیر کے روز اسی طرح کا رد عمل دیا ہے' ہم صرف ان کمپنیوں کے ساتھ کام کرتے ہیں جو ہر طرح کے امتیاز کو روکنے کی حامی ہوں۔ اس لیے ہم کسی بھی ایسیکمپنی کے ساتھ اپنا بزنس بند کر سکتے ہیں جو امتیازی سوچ کی حامل ہو۔

واضح رہے اسرائیل میں جمعرات کے روز نیتن یاہو کے زیر قیادت پارلیمنٹ سے ووٹ لینے والی نئی حکومت اسرائیل کی اب تک کی سب حکومتوں سے زیادہ شدت پسند حکومت کے طور پر سامنے آرہی ہے۔ اس وجہ سے کھلی نسل پرستی کے مخالفین اس حکومت کو ابھی سے تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں