اسرائیل نے ایران پر حملے کی تیاری بہتر بنالی: وزیر دفاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے سبکدوش ہونے والے وزیردفاع بینی گینز نے کہا ہے کہ صہیونی ریاست نے ایران پر حملہ کرنے کے لیے اپنی حربی تیاریوں کو بہتربنا لیا ہے۔انھوں نے فوج کی جانب سے ایران کی جوہری تنصیبات کو نشانہ بنانے کی تیاریوں کا حوالہ دیا ہے۔

بینی گینز نے بدھ کواسرائیلی فضائیہ کی گریجوایشن تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کسی دن پائلٹوں کو اس طرح کے حملے میں حصہ لینے کے لیے طلب کیاجاسکتا ہے۔

گینزنے کہا کہ’’آپ دو یا تین سال میں آسمان کو مشرق کی طرف پارکرسکتے ہیں اور ایران میں جوہری تنصیبات پر حملے میں حصہ لے سکتے ہیں۔اس کے لیے ہم تیاری کررہے ہیں، جبکہ حالیہ برسوں میں تیاری میں نمایاں اضافہ ہوا ہے‘‘۔

اسرائیل کویہ تشویش لاحق ہے کہ یوکرین جنگ میں ایران کی فوجی صلاحیت پرروس کا بڑھتا ہوا انحصار اس کے بدلے میں تہران کو جوہری پروگرام کے لیے روسی مدد حاصل کرنے کا موقع مہیا کرسکتا ہے۔ اسرائیل ایران کے اس دعوے کو بھی مستردکرچکا ہے کہ اس کا جوہری پروگرام پرامن مقاصد کے لیے ہے اور کہا ہے کہ وہ ایران کوجوہری بم کے حصول سے روکنے کے لیے کوئی بھی ضروری اقدام کرے گا۔

واضح رہے کہ گذشتہ ماہ اسرائیل میں منعقدہ انتخابات میں کامیابی کے بعد بنیامین نیتن یاہو کی سربراہی میں ایک نئی اسرائیلی حکومت تشکیل دی جارہی ہے اور جمعرات کو پارلیمنٹ سے اس کی منظوری متوقع ہے۔

اسرائیل کی دفاعی افواج کے سابق چیف آف جنرل اسٹاف بینی گینز کے حزب اختلاف کے رکن کی حیثیت سے پارلیمنٹ میں رہنے کا امکان ہے۔

یادرہےکہ اسرائیل نے 2007 میں شام میں ایک نامکمل جوہری ری ایکٹر کو فضائی حملے میں تباہ کر دیا تھا۔ صدام حسین کے تحت عراق کا ایک اچھی طرح سے تیار شدہ جوہری پروگرام تھا جب تک کہ اسرائیل نے 1981 میں ایک فضائی حملے میں اوسیرک ریسرچ ری ایکٹر کو تباہ کردیا تھا اور یوں اس کے عزائم کوخاک میں ملادیا تھا حالانکہ اسرائیل خود ایک غیرتسلیم شدہ اورغیرعلانیہ جوہری ریاست ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں