سال 2022 سعودی عرب میں سیاحت کے شعبے کی ترقی میں غیر معمولی اہمیت کا حامل ثابت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے سال 2022ء کے دوران سیاحت کے شعبے کو ترقی دینے کے لیے اقدامات اور پروگراموں کا ایک سلسلہ شروع کیا ہے۔

یہ علاقائی اور عالمی سطح پر اعلیٰ مقام حاصل کرنے کے لیے سیاحت کے شعبے کو اپ گریڈ کرنے کی تیز رفتار کوششوں کے حصے کے طور پر سامنے آیا ہے۔

سال 2022ء مملکت میں سیاحت کے شعبے کے لیے ایک غیر معمولی سال رہا ہے کیونکہ اس نے سیاحوں کی ترقی اور ہوٹل کے نئے کمروں کی تعداد کے حوالے سے ریکارڈ قائم کیے۔ اس کے علاوہ عالمی شراکت داریوں نے اس شعبے کو سال2030ء اپنے اہداف کے حصول کے لیے صحیح راستے پر گامزن کیا۔

نیا سیاحتی نظام، جسے اگست میں سعودی کونسل آف منسٹرز نے منظور کیا تھا، اس شعبے کے لیے ریگولیٹری اور قانون سازی کے ماحول کے لحاظ سے سب سے اہم کامیابی ہے۔

یہ نظام عالمی اقتصادی فورم کی طرف سے جاری کردہ سیاحت اور سفر کی مسابقت میں سرفہرست 10 ممالک کے انڈیکس کی بنیاد پر بین الاقوامی بہترین طریقوں پر مبنی ہے۔

اس نظام میں لائسنس دینے کے عمل کو منظم کرنا، تجرباتی سیاحتی سرگرمیوں کے لیے پرمٹ جاری کرنا، بحران سے نمٹنے کے لیے طریقہ کار کا ایک پیکیج فراہم کرنا، سیاحت کی کچھ سرگرمیوں کے لیے مالی ضمانتیں فراہم کرنا،اس کے علاوہ ایک معلوماتی ڈیٹا بیس کا قیام شامل ہے جس کا مقصد سیکٹر پر ڈیٹا اور اعدادوشمار فراہم کرنا ہے۔ .

سال 2022 میں "سیاحت کے علمبردار" پروگرام کے آغاز کا بھی مشاہدہ کیا گیا، جس کا مقصد 100,000 نوجوان سعودی مرد و خواتین کی صلاحیتوں کو فروغ دینا اور انہیں مہمان نوازی اور سفر کے شعبے میں بنیادی مہارتیں فراہم کرنا ہے۔

پروگرام میں حصہ لینے والے فرانس، سوئٹزرلینڈ اور برطانیہ سمیت ممالک کے ممتاز مقامی اور بین الاقوامی اداروں میں تربیتی وظائف سے مستفید ہوں گے۔

عالمی سطح پر اس شعبے کے امیج کو بڑھانے کے حوالے سے ریاض نے ورلڈ ٹریول اینڈ ٹورازم کونسل کی عالمی سمٹ کے سب سے بڑے ایڈیشن کی میزبانی کی، جس میں 5,700 شرکاء نے شرکت کی۔ان میں دنیا کی بڑی ٹریول اور مہمان نوازی کی کمپنیوں کے 250 سی ای اوز بھی شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں