سوڈان کے اسرائیل کے ساتھ معاہدہ میں شامل ہونے کا امکان ہے: صہیونی عہدیدار

سات یا آٹھ عرب یا اسلامی ملک ابراہیم معاہدہ میں شامل ہوسکتے ہیں: اسرائیلی اخبار ہارٹز کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے اخبار ’’ہارٹز‘‘ نے جمعرات کو بتایا کہ ایک اسرائیلی عہدیدار نے کہا ہے کہ سوڈان کے اسرائیل کے ساتھ ابراہیم معاہدہ میں شامل ہونے کا امکان ہے۔ اخبار نے اسرائیلی عہدیدار کا نام نہیں بتایا۔ اس عہدیدار کے مطابق دونوں ملکوں کے درمیان گزشتہ ہفتوں کے دوران مذاکرات ہوئے ہیں۔ بہ قبول عہدیدار امریکہ دونوں ملکوں کے درمیان ثالث کا کردار ادا کر رہا ہے۔ صہیونی عہدیدار نے مزید کہا کہ مذاکرات اب سطح تک پہنچ گئے ہیں کہ ابراہیم معاہدہ میں اب سوڈان کی شرکت ممکن نظر آرہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل موریطانیہ اور انڈونیشیا سمیت دیگر ممالک کے ساتھ بھی معاہدے کرنے کی امید رکھتا ہے۔ عہدیدار نے مزید بتایا کہ سات یا آٹھ عرب یا اسلامی ملک ابراہیم معاہدہ میں شامل ہوسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ اسرائیل نے عرب ملکوں کے ساتھ تعلقات کو نارمل کرنے اور بحران کو ختم کرنے کے لیے معاہدو ں کا ایک سلسلہ شروع کیاہے۔ اس حوالے سے 15 ستمبر 2020 کو پہلا معاہدہ ہوا تھا۔ اسرائیل کیساتھ اس معاہدہ میں بحرین اور متحدہ عرب امارات شریک ہوئے تھے۔ اس معاہدہ کی ثالثی بھی امریکہ نے کی تھی۔ اسرائیل اس معاہدہ میں دیگر عرب اور اسلامی ملکوں کو شامل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں