ہیرا پھیری کا شبہ: سعودی مالیاتی منڈی نے ایک انویسٹر کو استغاثہ کے حوالے کردیا

سکیورٹیز تنازعات کے حل کی کمیٹی کا خلاف ورزی ثابت ہونے کی صورت میں انویسٹر کی شناخت ظاہر کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی کیپٹل مارکیٹ اتھارٹی نے اتھارٹی کے بورڈ کے ایک فیصلے کو جاری کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس فیصلے میں کیپٹل مارکیٹ قانون کے آرٹیکل 49 اور مارکیٹ کنڈکٹ ریگولیشنز کے آرٹیکل 2 میں ایک انویسٹر کی جانب سے ممکنہ خلاف ورزی کے بعد اسے استغاثہ کے حوالے کرنے کی تصدیق کی گئی ہے۔

کیپٹل مارکیٹ اتھارٹی نے بدھ کو ایک بیان میں کہا کہ انویسٹر کو پبلک پراسیکیوشن کے دفتر کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے کیونکہ اس کی جانب سے حصص کی قیمتوں کو متاثر کرنے کے مقصد سے خریداری کے آرڈرز دخل اندازی ، ہیرا پھری اور گمراہ کرنے کی سرگرمی سامنے آئی تھی۔ حصص کی قیمت کو متاثر کرنے کے مقصد کے تحت سرگرمیاں کی گئیں۔ اسی طرح پھر خریدنے کے مقصد کے ساتھ فروخت کے آرڈر داخل کئے گئے۔

اتھارٹی نے کہا کہ مالیاتی مارکیٹ کے نظام اور اس کے نفاذ کے ضوابط کو نافذ کرنے اور مارکیٹ کو غیر قانونی طریقوں سے بچانے کی پوری کوشش کی جائے گی۔

سکیورٹیز کے تنازعات کے حل کی کمیٹیوں کے جنرل سیکریٹریٹ انویسٹر کی جانب سے قواعد کی خلاف ورزی ثابت ہوجانے کی صورت میں عوام کو اپنی ویب سائٹ پر اس انویسٹر کی شناخت کا اعلان بھی کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں