سعودی عرب کے آسمان پر ’’سنو مون‘‘ کا نظارہ

مکمل چاند اپنی سطح پر تابکار گڑھوں کا مشاہدہ کرنے اور تصویر کشی کے لیے بہترین قرار دیا جاتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے آسمان پر اتوار کی رات ’’ سنو مون‘‘ کا نظارہ کیا گیا۔ یہ پورا اور مکمل چاند ہوتا ہے ۔ یہ سعودی عرب اور عرب دنیا کے آسمان پر رات بھر نظر آیا ۔ اس پورے چاند کو سنو مون کہا جاتا ہے کیونکہ یہ مہینہ ایسا ہوتا ہے جس میں شمالی نصف کرہ میں سال میں سب سے زیادہ سردی ہوتی ہے۔ اکثر علاقے برف باری کا مشاہدہ کرتے ہیں۔ اس چاند کا نام کچھ مقامی امریکی قبائل کے نام سے بھی جانا جاتا ہے جنہوں نے اسے "بھوک کا چاند" بھی کہا تھا۔ اس نام رکھنے کی وجہ خوراک کے ذرائع کی کمی اور درمیانی عرصے میں شکار کے مشکل حالات تھے۔

اس سے قبل جدہ میں فلکیاتی سوسائٹی کے سربراہ ماجد ابو زاہرہ نے بتایا تھا کہ چاند غروب آفتاب کے ساتھ شمال مشرقی افق سے طلوع ہو گا اور جون کے سورج کے ظاہری راستے کی نقالی کرے گا ۔ چاند کا ظاہری سائز طلوع آفتاب کے وقت بڑا ہوتا ہے جب وہ افق کے قریب ہوتا ہے۔ یہ ممکن ہے کہ ہمارے سیارے کے ماحول کی وجہ سے یہ سرخ یا نارنجی رنگ کا بھی ہو سکتا ہے۔

ساری رات بھرا رہنے والا چاند

ماجد ابو زاہرہ نے کہا کہ عام طور پر یہ کہا جا سکتا ہے کہ چاند پوری رات بھرا رہے گا لیکن سائنسی طور پر پورے چاند کا نام اس وقت دیا جاتا ہے جب چاند سورج سے 180 ڈگری کے زاویے پر ہوتا ہے۔ یہ مکہ کے وقت کے مطابق رات 09:28 بجے ہو گا، جی ایم ٹی وقت کے مطابق شام چھ بج کر 28 منٹ ہوں گے۔ یہ چاند مہینے کے دوران زمین کے گرد اپنے مدار کا پورا نصف حصہ کر چکا ہوگا۔

اس کے بعد چاند مقامی وقت کے مطابق آدھی رات کے بعد آسمان کے بلند ترین مقام پر پہنچ جائے گا اور یہ پیر کو طلوع آفتاب کے ساتھ مغربی سے شمال مغربی افق پر ڈوب جائے گا۔

ابو زاہرہ نے مزید کہا کہ مہینے کا یہ وقت دوربین یا ایک چھوٹی دوربین کے ذریعے چاند کی سطح پر موجود تابکار گڑھوں کا مشاہدہ کرنے اور ان کی تصویر کشی کے لیے مثالی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آنے والی راتوں میں چاند ہر روز تقریباً ایک گھنٹہ کی تاخیر سے طلوع ہوگا۔ چند دنوں میں یہ صرف فجر کے وقت صبح کے آسمان میں نظر آئے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں