ترکیہ زلزلہ

حاکمِ دبئی کا زلزلہ سے متاثرہ شامی عوام کے لیے ایک کروڑ36 لاکھ ڈالرکی امدادکا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حاکمِ دبئی شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے ترکیہ اور ہمسایہ ملک شام میں سوموار کو 7.8 کی شدت کے تباہ کن زلزلے سے متاثرہ شامی عوام کے لیے ایک کروڑ36 لاکھ ڈالر (50 ملین درہم) کی انسانی امداد بھیجنے کا حکم دیا ہے۔

یواے ای کے سرکاری خبررساں ادارے وام نے خبردی ہے کہ انسانی بنیادوں پریہ امداد جنگ زدہ ملک میں کئی دہائیوں میں آنے والے سب سے تباہ کن زلزلے سے متاثر ہونے والوں کو ریلیف مہیا کرے گی۔

یہ امدادی سامان ’محمد بن راشدآل مکتوم عالمی اقدام‘ کے ذریعے پارسل راشن کی شکل میں شام میں زلزلے سے سب سے زیادہ متاثرہ افراد تک پہنچایا جائے گا۔

شام اور ترکیہ میں سرکاری اعدادوشمار کے مطابق شدید زلزلے سے مرنے والوں کی تعداد 6200 سے تجاوزکرگئی ہے جبکہ امدادی کارکنان ہنوزتباہ شدہ عمارتوں کے ملبے تلے پھنسے ہوئےافراد کی تلاش اور انھیں نکالنے میں مصروف ہیں۔

حکام کاکہنا ہے کہ ترکیہ میں 4,544 اور شام میں 1,712 افراد مارے جاچکے ہیں جس کے بعد دونوں ملکوں میں تصدیق شدہ اموات کی مجموعی تعداد 6,256 ہوگئی ہے۔

یہ خطے میں قریباً ایک صدی میں آنے والا سب سے طاقتورزلزلہ سمجھا جاتا ہے۔ترکیہ اورشام کے بڑے حصے میں سوموارکوعلی الصباح زلزلے کے شدیدجھٹکے محسوس کیے گئے تھے۔

زلزلے کا مرکزترکی کا جنوب مشرقی صوبہ کہرامماراس تھا اور اس کے جھٹکے مصرکے دارالحکومت قاہرہ تک محسوس کیے گئے۔اس کے چند گھنٹے کے بعد 7.5 شدت کا دوسرا زلزلہ آیاتھا۔اس کا مرکز ممکنہ طورپرابتدائی زلزلے کے مرکزسے100 کلومیٹر (60 میل) دور تھا اوراس سے مزید تباہی ہوئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں