حج وعمرہ

مکہ مکرمہ کے ہوٹلوں میں رہائشی بکنگ کا تناسب 70 فیصد تک جا پہنچا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

موجودہ دنوں کے دوران مکہ مکرمہ میں رہائش اور ہوٹل کے شعبے میں زبردست تیزی دیکھنے میں آئی۔ بڑی تعداد میں زائرین اور عمرہ زائرین کی آمد کی وجہ سے ہوٹلوں میں رہائش کی بکنگ کی شرح 70 فیصد سے زیادہ ریکارڈ کی گئی۔ خاص طور پر وسطی مکہ مکرمہ اور اس کے اطراف کے ہوٹلوں میں آنے والے مہمانوں کی تعداد میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

اس حوالے سے قومی کمیٹی برائے حج، عمرہ اور وزٹ نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو تصدیق کی کہ مکہ مکرمہ میں تقریباً 1,000 ہوٹلز اور 250,000 سے زیادہ ہوٹل کے کمرے ہیں، جن میں بین الاقوامی سطح کےاعلیٰ معیار کی سہولیات موجود ہیں۔ تمام ہوٹل عمرہ زائرین کا استقبال کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔ ان ہوٹلوں میں صفائی اور طہارت کا خاص اہتمام کیا جاتا ہے۔ چوبیس گھنٹے تمام سہولیات کی صفائی اور جراثیم کشی کے عمل کو انجام دے رہے ہیں۔ ان ایام میں پوری دنیا سے بڑی تعداد میں عازمین عمرہ کی آمد کی توقع کی جا رہی ہے۔

قومی کمیٹی برائے حج، عمرہ اور زیارت کے رکن اور مکہ المکرمہ میں ہوٹلز کمیٹی کے رکن ہانی العمیری نے کہا کہ گذشتہ چند دنوں میں العزیزیہ، الششا، محبس الجن اور المسفلہ میں واقع متعدد ہوٹلوں میں ریکارڈ بکنگ دیکھی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ حالیہ ایام میں مکہ معظمہ کے ہوٹلوں میں بکنگ کا تناسب 70 فی صد سے تجاوز کرگیا۔

العمیری نے نشاندہی کی کہ تقریباً 350 عمرہ کمپنیاں اور ادارے عازمین کو ان کی آمد سے لے کر عمرہ کی مناسک ادا کرنے کے بعد اپنے وطن روانگی تک بہترین خدمات فراہم کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں