دسمبر میں سعودی تیل کی برآمدات بڑھ کر 7.44 ملین بیرل یومیہ ہوگئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جوائنٹ ڈیٹا انیشی ایٹو (JODI)کے اعداد و شمار نے پیر کو بتایا کہ دسمبر میں سعودی عرب کی خام تیل کی برآمدات گزشتہ ماہ پانچ ماہ کی کم ترین سطح پر گرنے کے بعد بڑھ گئی ہیں۔ سعودی عرب کے خام تیل کی برآمدات دسمبر میں 2.2 فیصد بڑھ کر 7.44 ملین بیرل یومیہ ہوگئیں جو نومبر میں 7.28 ملین بیرل یومیہ تھیں۔ اس طرح گزشتہ ماہ کے مقابلے میں یومیہ 157 ہزار بیرل کا اضافہ دیکھا گیا۔ تاہم رائٹرز کے مطابق سعودی پیداوار نومبر میں 10.47 ملین بیرل یومیہ سے تھوڑی کم ہو کر 10.44 ملین بیرل یومیہ رہ گئی۔

سعودی عرب میں گھریلو خام تیل کی ریفائنریوں کی پیداوار دسمبر میں 40 ہزار بیرل یومیہ کی کمی سے 2.62 ملین بیرل یومیہ رہی ۔ سعودی عرب میں خام تیل کو براہ راست استعمال کرنے کی شرح 48 ہزار بیرل یومیہ اضافے سے 477 ہزار بیرل فی یوم تک پہنچ گئی۔

اس ماہ کے شروع میں سعودی عرب نے 6 ماہ میں پہلی مرتبہ ایشیائی خریداروں کے لیے اپنے اہم خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ کیا۔ خاص طور پر چین سے تیل کی طلب میں بحالی کی توقعات کے درمیان ایسا کیا گیا۔

سعودی عرب 2022 میں چین کو خام تیل فراہم کرنے والے سب سے بڑے سپلائر کے طور پر دوبارہ سامنے آیا ہے۔ توقع ہے کہ دسمبر میں چینی صدر شی جن پنگ کے دورہ ریاض کے بعد بھی ایسا ہی رہے گا۔

اوپیک نے اس ہفتے 2023 کے لیے عالمی تیل کی طلب میں اضافے کی اپنی پیشن گوئی میں اضافہ کیا ۔ اس کی ماہانہ رپورٹ نے گروپ کے معاہدے کے حصے کے طور پر سعودی عرب، عراق اور ایران میں خام تیل کی پیداوار میں کمی کو ظاہر کیا۔

انٹرنیشنل انرجی فورم نے JODI کے اعداد و شمار کے حوالے سے کہا کہ انڈونیشیا، جاپان اور کوریا میں اضافے کے باعث دسمبر میں عالمی سطح پر تیل کی طلب میں 1.3 ملین بیرل یومیہ اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ دریں اثنا روس تیل کی پیداوار میں 5 لاکھ بیرل یومیہ کمی کرنے کا ارادہ رکھتا ہے جو اس کی پیداوار کے تقریباً 5 فیصد کے برابر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں