ابوظبی جوڈیشل آؤٹ ریچ پروگرام کے تحت طلاق کی شرح میں 3 فیصد تک کمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ابوظبی جوڈیشل ڈیپارٹمنٹ کے مطابق گذشتہ سال طلاق کی شرح میں تقریباً 6 فیصد کمی واقع ہوئی ہے، سال 2022 میں طلاق کے واقعات صرف 3 فیصد رہ گئے، جبکہ 2021 میں یہ شرح 9 فیصد تھی۔

طلاق کی شرح میں کمی محکمہ عدل کے مختلف آؤٹ ریچ پروگراموں اور اقدامات کے کامیاب نفاذ کے باعث ممکن ہوئی، جن میں 'مفاہمت بہتر ہے' (الصلح خیر) اقدام بھی شامل ہے۔

اندازے کے مطابق 2018 میں طلاق کی شرح 12 فیصد رہی، اور 2019 اور 2020 میں 13 فیصد، پھر 2021 میں کم ہو کر 9 فیصد رہ گئی، اور 2022 میں 3 فیصد کی کم سے کم حد پر پہنچ گئی۔

بڑھتی ہوئی طلاقوں کے رجحان کو کم کرنے کے لیے محکمہ عدل نے تنازعات میں متبادل حل کے کلچر کو فروغ دینے کے لیے بہترین اور اختراعی طریقوں کو نافذ کیا۔

"صلح بہتر ہے" منصوبے کے تحت اختراعی اقدامات اٹھائے گئے۔ ماہر فیملی کونسلرز کے ذریعے رہنمائی کے سخت سیشنز کا انعقاد کیا گیا اور تربیتی ورکشاپس کا منعقد کی گئیں، جن میں ملٹی میڈیا اور انٹر ایکٹو مشقوں کے ذریعے گھریلو تنازعات سے نمٹنے کے لیے بنیادی مہارتیں سکھائی گئیں۔ ان سب کو ایک فالو اپ پلان کے ساتھ جوڑا گیا تھا تاکہ مفاہمتی معاہدے کی تعمیل کو یقینی بنایا جا سکے اور اس کے نفاذ کے دوران پیدا ہونے والی رکاوٹوں کو دور کیا جا سکے۔

روایتی عدالتی نظام سے باہر تنازعات کو حل کرنے کی کوشش سے مثبت نتیجہ سامنے آیا، خاندانی مشیروں کی کوششوں کے ذریعے فریقین تنازعات کے خوش اسلوبی سے حل کے لیے راضی ہوئے جو بالآخر طلاق کے مقدمات میں کمی کا باعث بنا۔

اعداد وشمار کے مطابق ابوظبی جوڈیشل ڈیپارٹمنٹ سال 2022 میں کل 15,606 خاندانی تنازعات میں سے 99.2 فیصد سے زیادہ خاندانی تنازعات کو نبٹانے میں کامیاب رہا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں