شمالی سعود ی عرب میں بہار کی آمد، بنفشی پھولوں نے خوبصورتی بڑھا دی

تبوک کا خطہ مختلف قسم کی جغرافیائی شکلوں کی خصوصیت رکھتا ہے، سیاحوں کے لیے پسندیدہ جگہ بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شمالی سعودی عرب کے شہر تبوک کے مغرب میں واقع مرکز ’’ شقری‘‘سے ملحقہ علاقے مختلف جنگلی جڑی بوٹیوں سے ڈھک گئے ہیں۔ اس خطے میں برسات کے بعد مختلف رنگوں اور پھولوں کی صورت میں خوبصورتی کی بہار آگئی ہے۔ نئے پھولوں نے موسم بہار کی آمد کا اعلان کردیا ہے۔ پھولوں نے لوگوں کی توجہ حاصل کرلی ہے۔ اس خوبصورتی کو فوٹو گرافر ’’ عیسی العنزی‘‘ نے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرلیا ہے۔ لیوینڈر کے پھولوں کی خوبصورتی کے حیران کن مناظر سامنے آئے ہیں۔ علاقے کو بنفشی قالین نے ڈھانپ لیا ہے ۔ اونٹ ، بھیڑ اور دیگر مویشیوں کے شوقین افراد یہاں آکر اپنی راحت کا سامان پیدا کر رہے ہیں۔

فوٹوگرافر عیسی العنزی نے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ اس جگہ کی فطرت موسم بہار کی خوبصورتی کی پہلی نشانی ہے۔ میں اس کی خوبصورتی کو دکھانے کے لیے یہاں آیا۔ تبوک شہر کے بہت سے مقامات پر بارشوں کے باعث چھوڑی گئی اس خوبصورتی کو فلمانے کے لیے اس جگہ کو فوٹوگرافروں کے لیے ایک پناہ گاہ سمجھا جاتا ہے۔

واضح رہے تبوک کا خطہ مختلف قسم کی جغرافیائی شکلوں سے متصف ہے، اس علاقے میں اونچائی کے پہاڑ اپنی مختلف شکلوں اور متعدد رنگوں کے ساتھ موجود ہیں۔ یہ پہاڑ موسم خزاں کے ساتھ ہی برف سے ڈھکے ہوئے تھے۔ یہاں تنوع اور مختلف قسم کی زمین ہے۔ اس کی ریت کو بھی اعلی درجہ بندی کی گئی ہے ۔ یہی وجہ ہے اس خطے کو جنگلی سیاحت سے محبت کرنے والوں اور پیدل سفر کرنے والوں کے لیے پسندیدہ علاقہ شمار کیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں