سعودی عرب نے جنین میں اسرائیلی فوج کی چھاپامارکارروائی کی مذمت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے مقبوضہ مغربی کنارے میں واقع جنین کے پناہ گزین کیمپ پراسرائیلی فوج کے منگل کو حملے کی مذمت کی ہے۔اس حملے میں چھے فلسطینی شہید ہوگئے تھے۔

سعودی عرب کی وزارتِ خارجہ نے بدھ کے روز ایک بیان میں اس حملے کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ وزارت ’’اسرائیلی افواج کی طرف سے سنگین تشدد کو مکمل طور پرمسترد‘‘کرتی ہے۔

سوشل میڈیا پرگردش کرنے والی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اسرائیلی فوجی گاڑیوں پرمقبوضہ مغربی کنارے میں مسلح فلسطینی دھڑوں کے اہم مراکز میں سے ایک جنین میں داخل ہو رہے ہیں۔

اس دوران میں ہیلی کاپٹرفضا میں پرواز کررہا تھا۔اسرائیلی فوجیوں کی اس جارحانہ کارروائی کے ردعمل میں کیمپ میں موجود افراد نے پتھراؤ کیا اور دھماکاخیزآلات پھینکے۔

جنین میں چھاپامارجارحانہ کارروائی میں شہید ہونے والے فلسطینیوں میں ایک مسلح شخص بھی شامل ہے۔اس پر گذشتہ ہفتے گاؤں حوارہ کے قریب ایک یہودی بستی میں دو بھائیوں کوگولی مارنے کا شبہ ہے۔

اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو نے کہا ہے کہ یہودی بستی میں ہلاکتوں کے ذمے دارمشتبہ شخص کو اسرائیلی فورسز نے سرجیکل کارروائی کرتے ہوئے ہلاک کردیا ہے۔

اسرائیلی فوج نےاس کی شناخت حماس کے رکن عبدالفتاح خروشہ کے طورپرکی ہے اورکہا ہے کہ اس کے دوبیٹوں کومغربی کنارے میں فلسطینی مزاحمت کاروں کی سرگرمیوں کے ایک اور مرکز نابلس شہر پر ایک ہی وقت میں چھاپے کے دوران میں گرفتار کیا گیا تھا۔

گذشتہ ہفتے یہودی آبادکاروں نے حوارہ میں درجنوں کاروں اور گھروں کوآگ لگادی تھی۔انھوں نے یہ کارروائی ایک فلسطینی مسلح شخص کی فائرنگ کے ردعمل میں کی تھی۔اس نے دو بھائیوں کو گولی مار دی تھی۔دونوں مہلوک اس گاؤں کے قریب ہی ایک چیک پوائنٹ پراپنی کار میں بیٹھے ہوئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں