یمن: اِب گورنری میں ٹینکر الٹنے سےسڑک ’شہد‘سے بھرگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کی اِب گورنری میں ایک شاہراہ عام پر ایک آئل ٹینکر کے الٹنے سے سڑک شہد کی طرح کے مادے سے بھر گئی۔ اس واقعے کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ہے جس پر صارفین کی طرف سے سخت رد عمل سامنے آیا ہے۔ صارفین اس واقعے کو اب پر مسلط حوثی ملیشیا کی غفلت اورلاپرواہی کا شاخسانہ قرار دےرہے ہیں۔

صارفین کا کہنا ہے کہ ایندھن کی سپلائی کے لیے استعمال ہونےوالے ٹینکر پرشہد لاد کر لے جانا پرلے درجے کی غفلت ہے۔

بہت سے مبصرین نے بغیرکسی تحقیق کےیندھن کے لیے مخصوص ٹینک میں شہد کی منتقلی پر حیرت کا اظہار کیا!

جبکہ دوسروں کا خیال تھا کہ یہ معاملہ حیران کن نہیں ہے، خاص طور پر چونکہ حوثی ملیشیا کے زیر کنٹرول علاقوں میں ایسا اکثرہوتا ہے۔

یمن میں سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں ایک راہگیر نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا "شہد کا ٹینک سڑک پر الٹ گیا"۔

انہوں نے اس واقعے کا ذمہ دار حوثیوں کو ٹھہرایا، جب کہ دیگر نے خطے میں شہد کے کچھ تاجروں کی جانب سے کیے جانے والے دھوکہ دہی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ یہ مائع گڑ تھا۔

بعد میں پتہ چلا کہ فیول ٹینک دراصل تقریباً 100,000 لیٹر صنعتی گڑ لے جا رہا تھا، جسے پھسلنےحاثہ پیش آیا۔

تاہم گورنری کے مقامی عہدیداروں میں سے ایک نے بعد میں واضح کیا کہ یہ گڑ جسے ایندھن کےٹینکرمیں منتقل کیا گیا تھا۔ اسے صرف چارے میں اضافے، مٹی کی کھاد اور شہد کی مکھیوں کی چراگاہوں کے طور پر استعمال کرنے کے لیے ہے اور یہ انسانی استعمال کے لیے نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں